حرکت کرتی حیرت انگیز تصاویر کی اصل کہانی

August 9, 2019

ایک تصویر ہزار الفاظ کے برابر ہوتی ہے ، یہ بات کسی خاص موضوع یا پیغام کے حوالے سے بنائی جانے والی تصاویر کیلئے کہی جاتی ہے لیکن اب تصاویرحرکت بھی کرتی ہیں۔

تھری ڈی اور دیگر جدید ٹیکنالوجیز کی بدولت آج کل ساکن تصاویر بھی حرکت کرتی دکھائی دیتی ہیں۔ ان ساکن تصاویرکو صرف چند سیکنڈ کےلیے نظر جما کر دیکھیں تو یوں لگے گا جیسے ان میں حرکت ہورہی ہے۔

حالانکہ ایسا کچھ بھی نہیں، اور سیکنڈزکے بجائے اگر صرف ایک منٹ تک ہی ان تصاویر کو ٹکٹکی باندھ کر دیکھ لیا جائے تو لگے گا جیسے آپ کا سر چکرانے لگا ہے۔

اگر ہم غورکریں تو علم ہوگا کہ یہ تمام تصاویر دراصل خاص طرح کے پیٹرن ہیں جنہیں باربار دہرا کر تصویر بنائی گئی ہے۔

جب بھی ایسا کوئی منظر ہماری آنکھوں کے سامنے آتا ہے تو انسانی دماغ اپنے طور پروضاحت کرنے کی کوشش کرتا ہے تاکہ متعلقہ تصویر کو سمجھ سکے۔

رنگ روشنی اور پیٹرنز کی مدد سے انسانی دماغ کو با آسانی دھوکا دیا جاسکتا ہے اور وہ ساکن تصویروں کو بار بار دہرائے جانے والے پیٹرنز کی وجہ سے متحرک کر دیتا ہے حالانکہ حقیقت میں وہ بالکل ساکن ہوتی ہیں۔