Thursday, September 23, 2021  | 15 Safar, 1443

ٹیکسلا:نصف صدی میں کونپل سےدرخت بننےوالےشجر کی کہانی

SAMAA | - Posted: Jul 22, 2021 | Last Updated: 2 months ago
SAMAA |
Posted: Jul 22, 2021 | Last Updated: 2 months ago

درخت کی ایک کونپل صدر پاکستان کو دسمبر 1963 کے دورہ سری لنکا میں بطور تحفہ پیش کی گئی

بدھ مت اور گندھارا تہذیب میں مقدس ترین درخت بُودھی شجرکا کہا جاتا ہے۔ لگ بھگ 2 سے ڈھائی ہزار سال قدیم اِس درخت کی ایک کونپل صدر پاکستان کو دسمبر 1963 کے دورہ سری لنکا میں بطور تحفہ پیش کی گئی اور جنوری 1964 میں وزیر خارجہ ذوالفقار علی بھٹو نے اُسے ٹیکسلا کے میوزیم میں لگایا۔ انورادھا پور میں 2000 ہزار سال سے زائد عمر کا بودھی شجر یونیسکو کی جانب سے عالمی ورثہ قرار دیئے گئے مقامات میں بھی شامل ہے۔ سری لنکن قومی پرچم میں بھی بدھی شجر کے پتوں کو خاص ہی مقام حاصل ہے۔

WhatsApp FaceBook
تازہ ترین
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube