ہوم   > ویڈیو

پی آئی اےکےطیارےکوحادثےسےپہلےکیا ہواتھا؟

SAMAA | - Posted: May 23, 2020 | Last Updated: 1 week ago
SAMAA |
Posted: May 23, 2020 | Last Updated: 1 week ago

لینڈنگ کی کوشش کی تھی

پی آئی اے کے طیارے نے آبادی پر گرنے سے قبل بھی لینڈنگ کی کوشش کی تھی لیکن وہ کامیاب نہ ہوسکی تھی۔کراچی ميں جمعرات کی دوپہر گر کر تباہ ہونے والے پی آئی اے کےطيارے پی کے 8303 نے دوپہر ايک بج کر پانچ منٹ پر لاہور سے اڑان بھری تھی،طيارہ ڈھائی بجے کراچی ايئرپورٹ سے چند کلوميٹرہی دور تھا،2بج کر 34 منٹ پر طيارے نے لينڈنگ کی پہلی کوشش کی۔فلائٹ ريڈار کے ڈيٹا کے مطابق طيارہ275 فٹ تک نيچے آيا مگر پھر لينڈنگ کی کوشش ترک کرکے 3175 فٹ کیبلندی پرچلا گيا۔ دو بج کرچاليس منٹ پر جب طيارہ 525 پر تھا تو اس کا رابطہ کنٹرول ٹاور سے منقطع ہوگيا۔پی آئی اے کے سی ای او کے مطابق پائلٹ نے آخری پيغام ميں بتايا تھا کہ انجن کام نہيں کررہا۔ پائلٹ کو کہا گياکہ لينڈنگ کے ليے دونوں رن وے تيار ہيں مگر پائلٹ نے کہا کہ وہ گھوم کر آنا چاہتے ہيں۔ ايوی ايشن ايکسپرٹ کے مطابق انجن کی خرابی، پہيے کا نہ کھلنا پرندے کا ٹکرانا يا کوئی تکنيکی خرابی اس کی وجہ ہوسکتی ہے۔

WhatsApp FaceBook

آپ کے تبصرے

Your email address will not be published.

متعلقہ خبریں
WhatsApp FaceBook
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube