ہوم   >  پاکستان

فلائٹ کا انتظار رباب بجاکر بھی کیا جاسکتا ہے

6 days ago

ویڈیو سوشل میڈیا پر وائرل

رباب اور پختون کلچر کا تعلق کتنا گہرا ہے، اس کا اندازہ اس بات سے لگایا جاسکتا ہے کہ پختون معاشرے میں عام طور پر فنکاروں اور موسیقاروں کو اچھی نظر سے نہیں دیکھا جاتا مگر رباب واحد موسیقی ہے جو سب کیلئے قابل قبول ہے۔ اس ساز میں کوئی ایسا احساس چھپا ہے کہ سنتے ہی راہ چلتا بندہ بھی ایک لمحے کیلئے رک جاتا ہے۔ حجروں میں رباب کی خصوصی محفلیں سجتی ہیں اور نوجوان اپنے رباب لیکر کھیتوں اور پہاڑوں میں چلے جاتے ہیں اور کسی ویرانے میں بیٹھ کر رباب کے ذریعے دل کے تار چھیڑتے رہتے ہیں۔

گزشتہ دنوں سے سوشل میڈیا پر ایک ویڈیو وائرل ہورہی ہے جس میں دیکھا جاسکتا ہے کہ ایک پختون نوجوان کسی ایئرپورٹ پر اپنی فلائٹ کا انتظار کر رہا ہے۔ ایئرپورٹ کا عملہ اپنے معمول کے کاموں میں مصروف ہے اور نوجوان ایک کونے میں بیٹھ کر رباب سے دل بہلاتا ہے۔  یہ نہیں معلوم ہوسکا کہ نوجوان کون ہیں اور ایئرپورٹ کونسا ہے۔ اگر آپ اس بارے میں جانتے ہیں تو کمنٹ سیکشن میں بتا دیجئے گا۔ جیسے اوپر کہا گیا کہ رباب کا ساز سن کر راہ گیر بھی رک جاتے ہیں تو ایسا ہی انٹرنیٹ پر بکھری پڑی لاکھوں ویڈیوز میں یہ ایسی ویڈٰیو ہے جو انٹرنیٹ صارفین کو دیکھنے اور سننے پر مجبور کرتی ہے۔ آپ بھی دیکھئے، سنئے اور دل کے تار چھیڑیے۔

 
TOPICS:

آپ کے تبصرے

Your email address will not be published.

 
متعلقہ خبریں