شمالی کوریا نے سائبر حملوں سے 2 ارب ڈالر بٹور لئے، اقوام متحدہ

August 6, 2019

اقوام متحدہ نے اپنی نئی رپورٹ میں انکشاف کیا ہے کہ شمالی کوریا نے بین الاقوامی سطح پر مختلف بینکوں اور کرپٹو کرنسی کی تجارت کرنیوالے اداروں پر بڑے سائبر حملے کرکے اپنے ہتھیاروں کے پروگرام کیلئے 2 ارب ڈالر بٹورے۔

غیر ملکی میڈیا کے مطابق عالمی ادارے کی سلامتی کونسل کی ایک نئی رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ کمیونسٹ شمالی کوریا گزشتہ کافی عرصے سے اپنے ہتھیاروں کے پروگرام کیلئے مالی وسائل اپنے ہیکرز کی طرف سے بیرون ملک سائبر حملوں کے ذریعے حاصل کرتا آیا ہے، ان حملوں میں ناصرف بڑے بڑے بینکوں کے آن لائن نظاموں کی ہیکنگ کی گئی بلکہ اس دوران بہت مہنگی کرپٹو کرنسی کی تجارت کرنیوالے کاروباری اداروں کو بھی نشانہ بنایا گیا۔

رپورٹ کے مطابق یہ حملے ناصرف بہت ہی جدید اور 'اسٹیٹ آف دی آرٹ‘ انداز میں کئے گئے بلکہ ان کا بروقت پتہ چلانا اب تک اس لئے بھی بہت مشکل ہے کہ ایسی کارروائیاں اور بھی زیادہ منظم اور نپے تلے طریقے سے کی جانے لگی ہیں۔

یہ رپورٹ غیر جانبدار بین الاقوامی ماہرین کے ایک گروپ نے سلامتی کونسل کیلئے تیار کی ہے، جس میں یہ جائزہ لیا گیا ہے کہ پیانگ یانگ نے گزشتہ 6 ماہ کے دوران اقوام متحدہ کی عائد کردہ بین الاقوامی پابندیوں کا کس حد تک احترام کیا۔

رپورٹ میں انکشاف کیا گیا ہے کہ شمالی کوریا کی طرف سے سائبر حملے مزید وسیع اور جدید تر ہوتے جا رہے ہیں۔