زہریلا دھواں اب بیمار نہيں، عوام کو خوشحال کرے گا

February 9, 2019

صنعتی فضلہ منافع بخش صنعت کا روپ دھارنے لگا ہے، میڈ ان پاکستان اسموک ٹریٹمنٹ پلانٹ کی ریورس انجینئرنگ ٹیکنالوجی کے کمال کے باعث دھواں سو سے زائد فلٹرز سے گزر کر تازہ ہوا میں ڈھل جائے گا، لوگ پیسے بھی کمائیں گے اور روزگار بھی ملے گا۔

دہکتے الاؤ پر پگھلتی دھاتوں سے نکلتا زہریلا دھواں ، کل تک جس سے بچنے کے جتن کرنے والے اب اسی کی مانگ کرنے لگے، صنعتی فضلہ خود منافع بخش صنعت کا روپ جو دھارنے لگا ۔

میڈ ان پاکستان ، اسموک ٹریٹمنٹ پلانٹ کی ریورس انجینئرنگ ٹیکنالوجی کے کمال سے پلانٹ میں 100 سے زائد فلٹرز سے گزر کر دھواں تازہ ہوا میں ڈھل جائے گا جبکہ زنک، سلفر، کاربن اور میگنیشیئم سفوف بن جائیں گے۔

کوالٹی کنٹرول انجینئیر محمد مدثر کا کہنا ہے کہ اس میں ریورس اسموک ٹیکنالوجی استعمال کی جار ہی ہے جو جدید ترین ہے اس میں دھویں فلٹر ہو جاتا ہے پاوڈر کی شکل میں نیچے آ جاتا ہے، زہریلا دھواں اب لوگوں کو بیمار اور بے حال نہیں ۔۔ بلکہ آسودہ اور خوشحال کریگا۔

کوالٹی کنٹرول انجینئیر محمد مدثر نے کہا کہ کراچی اسٹیل ملز ایک دن میں ایک ٹن کے قریب یہ پاوڈر بنتا ہے جبکہ مہینے میں 30 ٹن تک یہ پاوڈر بنتا ہے اور 50 روپے کلو فروخت ہوتا ہے۔