بچوں کو موبائل فون کیوں نہ دیں؟ نئی تحقیق نے والدین کو خبردارکردیا

February 8, 2019

جدید دور کے تقاضے بھی نئے ہیں جس میں موبائل فون سمیت ٹیکنالوجی کو زندگی گزارنے کیلئے لازم وملزوم سمجھ لیا گیا ہے۔ بڑے تو بڑے ، ننھے بچے تک موبائل فون کے دلدادہ ہیں لیکن نئی تحقیق میں والدین کو خبردار کیا گیا ہے کہ بچوں کو کھانے اورسونے کے وقت موبائل فونزسے دوررکھاجائے کیونکہ الیکٹرانک آلات کازیادہ استعمال ذہنی مسائل کا سبب بننے لگا۔

برطانوی ماہرین کے مطابق والدین اپنے بچوں کوتوجہ اورخاندان کووقت دیں، صرف سوشل میڈیا پر تصاویر شئیر کرنے سے اولاد کو خوش نہیں رکھا جا سکتا۔ ذہنی امراض کے ماہرین کے مطابق آن لائن دیکھی جانے والی چیزیں نقصان دہ ثابت ہو سکتی ہیں۔

برطانیہ میں طب کے شعبے سے وابستہ چار سینیئر ماہرین نے کھانے کی میز اور سونے کے اوقات میں موبائل فونز پر پابندی کی تجویزدی ہے۔

برطانیہ کی چیف میڈیکل آفیسر پروفیسر ڈیم سیلی ڈیوس کا کہنا ہے کہ خاندان کے افراد سے بات چیت بچوں کی نشوو نما کے لیےاہم ہے، اس لیے کھانے کی میز پر موبائل فون اوراس قسم کے آلات کو استعمال نہ کیا جائے۔

اس کے علاوہ سونے کے اوقات میں بھی موبائلفون کو کمرے سے باہر رکھا جائے جبکہ سڑک عبورکرتے وقت بھی کوئی ایساکام نہ کیاجائے جوآپ کی بھرپورتوجہ چاہتا ہے کیونکہ ایسا کرنا خطرے سے خالی نہیں۔

ماہرین نے سماجی رابطوں کے اداروں سے بھی کہا کہ وہ ایسی ٹیکنالوجی کااستعمال کریں جس سے صارفین کو مثبت مواد ملے ۔