ڈیٹا لیک ہونے پر گوگل پلس بند کرنے کا اعلان کردیا

October 10, 2018

گوگل انتظامیہ نے فیس بک کے مقابلے میں لانچ کردہ گوگل پلس کو سیکیورٹی خدشات پر بند کرنے کا اعلان کردیا۔

خبر رساں ایجنسی کی جانب سے جاری رپورٹس کے مطابق معروف سرج انجن گوگل کی جانب سے اس بات کا اعتراف کیا گیا ہے کہ 2011 میں گوگل پلس متعارف کیے جانے کے بعد سے یہ سوشل میڈیا صارفین کو زیادہ متاثر نہیں کرسکا اور سیکیورٹی حملوں کے بعد اسے بند کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔

 

گوگل نے کہا کہ وہ صارفین کے لیے گوگل پلس کو بند کرنے جارہے ہیں، ہیکرز کے حملوں کے باعث ہزاروں صارفین کو ڈیٹا دوسروں تک پہنچا اس لیے حفاظتی اقدامات کے پیش نظر یہ فیصلہ کیا گیا ہے۔

 

گوگل کی جانب سے یہ اعلان اس وقت کیا گیا ہے جب امریکی اخبار وال اسٹریٹ جنرل نے اپنی رپورٹ میں اس بات کا انکشاف کیا تھا کہ گوگل نے فیصلہ کیا ہے کہ وہ ہیکرز کے حملوں کے متاثرہ صارفین کی تفصیلات سامنے نہیں لائے گا۔

 

یاد رہے کہ رواں سال مارچ میں انکشاف ہوا تھا کہ ہیکرز نے 50 لاکھ گوگل صارفین کے ڈیٹا تک رسائی حاصل کی اور ہیکرز نے صارفین کے ان باکس کی بھی جانچ پڑتال کی۔

 

گوگل کی جانب سے پلس کو بند کرنے کا اعلان آنے کے بعد گوگل کی پیرنٹ کمپنی الفابیٹ کے شئیر2.6 فیصد گر گئے ہیں۔ گوگل نے کہا ہے کہ اسے اس بات کا کوئی ثبوت نہیں ملا کہ کسی ڈویلیپر کو بگ کے بارے میں معلومات تھی یا اس نے اے پی آئی کا غلط استعمال کیا ہے اور کسی بھی ڈیٹا کے غلط استعمال کا بھی کوئی ثبوت نہیں ملا ہے۔