Monday, October 26, 2020  | 8 Rabiulawal, 1442
ہوم   > کھیل

سربین اسٹار نواک جوکووچ اٹالین اوپن کے فاتح

SAMAA | - Posted: Sep 23, 2020 | Last Updated: 1 month ago
SAMAA |
Posted: Sep 23, 2020 | Last Updated: 1 month ago
Novak afp

فوٹو: اے ایف پی

سربیا سے تعلق رکھنے والے ٹینس کے عالمی نمبر ایک نواک جوکووچ نے روم میں کلے کورٹ پر ہونے والا اٹالین اوپن ٹینس ٹورنامنٹ سخت مقابلے کے بعد جیت کر نیا ریکارڈ قائم کر دیا اور وہ سب سے زیادہ 36 اے ٹی پی 1000 ماسٹرز ٹائٹلز جیتنے والے کھلاڑی بن گئے۔ انہوں نے عالمی نمبر 2 اور کلے کورٹ اسپیشلسٹ رافیل نڈال کو پیچھے چھوڑ دیا جن  کے اے ٹی پی 1000 ماسٹرز ٹائٹلز کی تعداد 35 ہے۔ راجر فیڈرر 28 اعزازات کے ساتھ تیسرے نمبر پر ہیں جبکہ آندرے اگاسی نے 17 اور اینڈی مرے نے 14 ٹائٹل جیتے ہیں۔ 33 سالہ نواک جوکووچ نے ارجنٹائنی کھلاڑی ڈیگو شوارٹزمین کو پہلے سیٹ میں جان گسل مقابلے میں 5-7‘ 3-6  سے زیر کیا۔ پہلے سیٹ میں شوارٹزمین نے جم کر مقابلہ کیا اور ابتدا میں ہی اپنے حریف پر برتری حاصل کر لی تھی۔ ایک مرحلے پر ایسا لگتا تھا کہ ارجنٹائنی کھلاڑی کوارٹر فائنل جیسا ہی اپ سیٹ کر دے گا لیکن نواک جوکووچ پانچویں گیم جیتنے کے بعد زیادہ سنبھل کر کھیلے۔ ڈراپ شاٹس نے ان کی کامیابی میں اہم کردار ادا کیا۔ دوسرے سیٹ میں بھی ابتدا میں شوارٹزمین کو برتری حاصل تھی لیکن جوکووچ نے جلد ہی کھیل پر کنٹرول حاصل کر لیا اور مسلسل تین گیمز جیت کر دوسرا سیٹ 3-6 سے اپنے نام کر کے فائنل جیتا۔

گزشتہ ماہ نواک جوکووچ نے سنسناٹی اوپن کا اعزاز جیت کر رافیل نڈال کا 35 ٹائٹلز کا ریکارڈ برابر کیا تھا۔ نڈال اس بار اٹالین اوپن میں اپنے اعزاز کے دفاع کیلئے کرونا وائرس پینڈامک کی وجہ سے 7 ماہ بعد کورٹ میں واپس آئے تھے جہاں غیرمتوقع طور پر انہیں کوارٹر فائنل میں ارجنٹینا سے تعلق رکھنے والے عالمی نمبر34  ڈیگو شوارٹزمین نے شکست سے دو چار کیا تھا۔ کلے کورٹ کنگ نڈال کے خلاف شوارٹزمین کی یہ پہلی کامیابی تھی اس سے قبل ارجنٹائنی کھلاڑی کو 9 میچوں میں ہسپانوی سپر اسٹار کے ہاتھوں شکست اٹھانا پڑی تھی۔ رافیل نڈال 9 مرتبہ اٹالین اوپن ٹائٹل جیت چکے ہیں اور وہ 10 بار بھی اس ایونٹ کو اپنے نام کرنے کیلئے پرعزم اور فیورٹ تھے۔

سربین ٹینس اسٹار نے روم کی کلے کورٹ پر 1000 سے زائد تماشائیوں کی موجودگی میں پانچویں مرتبہ اٹالین اوپن کا اعزاز اپنے نام کیا۔ یہ تماشائی کرونا وائرس حفاظتی اقدامات کے تحت فائنل میں سماجی فاصلے کو برقرار رکھے ہوئے تھے۔ تماشائیوں کی موجودگی سے کھلاڑیوں کی حوصلہ افزائی ہوئی۔ نواک جوکووچ کو اٹالین اوپن کے فائنل میں پانچ مرتبہ ہی شکست کا منہ دیکھنا پڑا ہے۔ انہیں فائنل میں تین مرتبہ رافیل نڈال‘ ایک مرتبہ الیگزینڈر زیوریف اور ایک بار اینڈی مرے نے زیر کیا تھا۔ نواک جوکووچ نے دو مرتبہ فائنل میں رافیل نڈال کے خلاف کامیابی حاصل کی۔ نواک جوکووچ  نے اپنا پہلا اٹالین اوپن اعزاز 2008 میں فائنل میں سوئس اسٹار سٹان واورنکا کو شکست دے کر حاصل کیا تھا۔ سربین ٹینس اسٹار کا کہنا تھا کہ رافیل نڈال کے بغیر اٹالین اوپن کا فائنل بالکل اجنبی لگ رہا تھا کیونکہ نڈال اور فائنل لازم و ملزوم ہیں اور اس کورٹ پر ہسپانوی اسٹار نے ہمیشہ اچھی پرفارمنس  دکھائی ہے۔

یہ نواک جوکووچ کے کیریئر کا 81 واں ٹائٹل ہے۔ اس کامیابی سے وہ ٹائٹل جیتنے والے مرد کھلاڑیوں کی فہرست میں پانچویں نمبر پر پہنچ گئے۔ امریکا کے جمی کونرز 109 ٹائٹلز کے ساتھ سرفہرست ہیں جبکہ 20 گرینڈ سلام جیتنے والے سوئیزرلینڈ کے راجر فیڈرر 103 اعزازات کے ساتھ دوسرے چیکوسلواکیہ کے ایوان لینڈل 94 کے ساتھ تیسرے اور اسپین کے رافیل نڈال 85 ٹائٹلز جیت کر چوتھے نمبر پر ہیں۔ اس کامیابی نے جوکووچ کو فرنچ اوپن سے قبل بڑا حوصلہ دیا ہے کیونکہ گرینڈ سلام یو ایس اوپن کے کوارٹر فائنل میں انہیں ڈرامائی انداز میں کوارٹر فائنل میں ڈس کوالیفائی کر دیا گیا تھا جب انہوں نے مایوسی اور غصے کے عالم میں نادانستگی میں گیند کو ریکٹ سے پیچھے کی جانب مارا جو وہاں بیٹھی  خاتون لائن جج کی گردن پر لگی جو شدت درد سے کراہتے ہوئے زمین پر گر گئی تھی۔ جوکووچ نے اپنے اس عمل پر معافی مانگ لی تھی لیکن کافی مباحثے کے بعد ٹورنامنٹ رولز پر عمل کرتے ہوئے انہیں ڈس کوالیفائی کر دیا گیا تھا۔ وہ ٹورنامنٹ کیلئے فیورٹ تھے۔ تاہم انہوں نے اٹالین اوپن کے دوران بھی ایک میچ میں پوائنٹ گنوانے کے بعد انہوں نے غصے میں ریکٹ زمین پر دے مارا تھا تاہم بعد میں اپنے رویے پر انہوں نے معذرت کی اور کہا کہ میں اپنے اس عمل پر شرمندہ ہوں کیونکہ میرا یہ رویہ نئے کھلاڑیوں کیلئے کوئی اچھی مثال نہیں ہے۔

سترہ گرینڈ سلام اعزازات جیتنے والے نواک جوکووچ نے اٹالین اوپن کے فائنل میں رسائی کرکے ایک اور ریکارڈ بھی اپنے نام کیا۔ وہ ماسٹرز 1000 ایونٹس کے 52 ویں فائنل میں پہنچے اور انہوں نے رافیل نڈال 51 اور سوئس لیجنڈ راجر فیڈرر 50 بار ماسٹرز 1000 فائنلز کو پیچھے چھوڑ دیا۔ تاہم ماسٹرز 1000 ٹورنامنٹس میں فتوحات کے اعتبار سے رافیل نڈال 384 کامیابیوں کے ساتھ سر فہرست ہیں جبکہ راجر فیڈرر 381 کامیابیاں دوسرے اور جوکووچ 361 کے ساتھ تیسرے نمبر پر ہیں۔ رواں سیزن میں جوکووچ میں بہترین کارکردگی کا مظاہرہ کر رہے ہیں اور انہوں نے 31 میچز میں کامیابیاں حاصل کیں جبکہ صرف ایک میچ میں شکست ہوئی جو یو ایس اوپن میں ڈس کوالیفائی والا میچ تھا۔

خواتین سنگلز فائنل میں عالمی نمبر 2 رومانیہ کی سیمونا ہالیپ نے دفاعی چیمپئن کیرولینا پلکسکووا کو ہرا کر اپنے کیریئر کا پہلا اٹالین اوپن ٹائٹل جیت لیا۔ سیمونا ہالیپ تیسری مرتبہ فائنل میں پہنچنے کے بعد فتح یاب ہوئی ہے۔ سیمونا ہالیپ نے فائنل کے پہلے سیٹ میں شاندار کارکردگی کا مظاہرہ کرتے ہوئے صرف 20 منٹ میں 0-6 سے کامیابی حاصل کی تھی۔ اس کے جارحانہ اسٹروکس کے سامنے پلسکووا بالکل بے بس نظر آئی۔ دوسرے سیٹ میں بھی سیمونا ہالیپ نے اپنا جارحانہ کھیل جاری رکھا اور جب ہالیپ کو 1-2 کی سبقت حاصل تھی کہ کیرولینا پلسکووا نے انجری کی وجہ سے میچ مزید جاری رکھنے سے معذوری کا اظہار کر دیا۔ کیرولینا پلسکووا کی بائیں ران پر بینڈیج تھی اور دوسرے سیٹ میں اسے کمر میں تکلیف کی وجہ سے بھی طبی امداد لینا پڑی لیکن درد کی شدت کم نہ ہونے پر پلسکووا نے مزید کھیلنے سے انکار کر دیا اور میچ سے دستبردار ہوگئیں اور اس طرح سیمونا ہالیپ پہلی بار اٹالین اوپن چیمپئن بن گئیں۔ گزشتہ سال جمہوریہ چیک سے تعلق رکھنے والی سابق عالمی نمبر ایک اور سیڈ 2 کیرولینا پلسکووا نے فائنل میں برطانیہ کی یوہانا کونٹا کو 3-6‘ 4-6  سے ہرا کر اپنا پہلا اٹالین اوپن اعزاز جیتا تھا۔ روم میں کھیلے جانے والے اس ایونٹ میں سیمونا ہالیپ کو 2017 اور 2018 میں مسلسل دو سال فائنل میں یوکرائن کی ایلینا سویٹولینا کے ہاتھوں شکست کی ہزیمت اٹھانا پڑی تھی۔

ومبلڈن چیمپئن سیمونا ہالیپ کے کیریئر کا یہ 22 واں ٹائٹل ہے جو انہوں نے فرنچ اوپن کے آغاز سے قبل جیتا ہے۔ سیمونا نے 2018 میں فرنچ اوپن کا اعزاز بھی جیتا تھا۔ اس کامیابی کے ساتھ ہی رواں سیزن میں وہ مسلسل 14 میچ جیت چکی ہیں جبکہ انہوں نے کرونا وائرس لاک ڈاؤن سے قبل فروری میں دبئی اوپن کا ٹائٹل جیتا تھا اور گزشتہ ماہ پراگ میں بھی ایک اعزاز اپنے نام کیا تھا۔ سیمونا ہالیپ نے گزشتہ ماہ ہونے والے یو ایس اوپن میں شرکت نہیں کی تھی۔ سیمونا ہالیپ نے گاربین موگوروزا کو سیمی فائنل میں سخت مقابلے کے بعد شکست سے دوچار کیا تھا۔

اس ٹائٹل کے ساتھ ہی سیمونا ہالیپ موجودہ کھلاڑیوں میں کلے کورٹ اعزازات کے حوالے وینس ولیمز 9 ٹائٹل کے ہم پلہ ہو گئی ہیں جبکہ سرینا ولیمز 13 کلے کورٹ اعزازات کے ساتھ پہلے نمبر پر ہیں۔ سارہ ایرانی 7 اعزازات تیسرے نمبر پر ہے۔ اٹالین اوپن جیتنے پر سیمونا ہالیپ کو 899 پوائنٹس ملے ہیں اور وہ ڈبلیو ٹی اے رینکنگ میں عالمی نمبر ایک ایشلے بارٹی کے قریب ہوگئی ہیں جن کے 8717 پوائٹس ہیں جبکہ سیمونا ہالیپ 7255 پوائنٹس دوسرے نمبر پر ہیں۔ آسٹریلیا سے تعلق رکھنے والی عالمی نمبر ایک ایشلے بارٹی اس بار فرنچ اوپن میں اپنے اعزاز کا دفاع نہیں کر رہی اور اگر سیمونا ہالیپ  فرنچ اوپن جیت گئیں تو وہ عالمی نمبر ایک کی پوزیشن پر بھی فائز ہو جائیں گی۔ کلے کورٹ پر شاندار کارکردگی کی وجہ سے فرنچ اوپن کیلئے وہ ٹاپ سیڈ ہونے کے ساتھ فیورٹ بھی قرار دی جا رہی ہیں۔ اٹالین اوپن ویمنز فائنل میں ریٹائر ہونے والے کیرولینا پلسکووا کا کہنا ہے کہ وہ فرنچ اوپن تک فٹ ہو جائے گی اور اسے امید ہے کہ وہ پیرس ایونٹ کے فائنل میں ہالیپ کے مدمقابل ہوگی۔

پیرس میں فرنچ اوپن کے کوالیفائنگ راؤنڈ میں حصہ لینے والے پانچ کھلاڑیوں کے کرونا ٹیسٹ پزیٹیو آئے ہیں جس کی وجہ سے منتظمین میں تشویش کی لہر دوڑ گئی ہے کیونکہ فرنچ اوپن میں میچز دیکھنے کیلئے تماشائیوں کو اسٹیڈیم آنے کی اجازت دی گئی ہے۔ پہلے یہ تعداد 10 سے زائد رکھی گئی تھی لیکن فرانس میں کرونا وائرس کی دوسری لہر کی وجہ سے اس تعداد کو کم کر کے 5ہزار کر دیا گیا ہے اور صورت حال کو مد نظر رکھتے ہوئے اس میں مزید کمی کی جا سکتی ہے۔  فرنچ اوپن کا مین راؤنڈ 27 ستمبر سے شروع ہوگا۔

WhatsApp FaceBook

آپ کے تبصرے :

Your email address will not be published.

متعلقہ خبریں
WhatsApp FaceBook
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube