ہوم   > کھیل

اينٹی کرپشن يونٹ:عمراکمل کےفکسنگ کےمعاملےکی انکوائری شروع

SAMAA | - Posted: Feb 25, 2020 | Last Updated: 3 months ago
Posted: Feb 25, 2020 | Last Updated: 3 months ago

ٹیلی فون کالز اور پیغامات کا فرانزک ہوگا

پاکستان کرکٹ بورڈ کے اينٹی کرپشن يونٹ نے کرکٹرعمراکمل کے فکسنگ کے معاملے کی انکوائری شروع کردی ہے۔

اینٹی کرپشن ہونٹ نے عمر اکمل کے موبائل فونز، لیپ ٹاپ اور آئی پیڈ کو فرانزک کیلئے بھجوادیا ہے۔ اینٹی کرپشن یونٹ کا کہنا ہے کہ عمراکمل نے پاکستان سپر لیگ میں کوئٹہ گلیڈی ایٹرز کے پہلے ميچ ميں3 جگہ اسپاٹ فکسنگ کرنا تھی۔ عمر اکمل کے خلاف ثبوت موبائل فونزمیں موجود ہیں۔

عمراکمل کی ٹیلی فون کالز اور پیغامات کا فرانزک ہوگا اور فرانزک ٹیسٹ کے بعد حتمی چارج شیٹ تیار کی جائے گی۔ چارج شیٹ، فرانزک رپورٹ اور اینٹی کرپشن یونٹ کی تحقیقات کےتحت ہوگی۔

عمر اکمل کو پی سی بی نے پچھلے ہفتے شوکاز نوٹس جاری کیا تھا۔ نوٹس میں لکھا گیا ہے کہ ان پر جو الزامات ہیں، اس سے متعلق وہ جواب دیں۔ عمر اکمل کی سرگرمیوں سے متعلق بھی جواب مانگا گیا ہے۔ عمر اکمل پر جرم ثابت ہونے پر ان پر 2 سے 5 سال کی پابندی عائد کی جاسکتی ہے۔

عمر اکمل کو آرٹیکل اینٹی کرپشن کوڈ کی دفعہ 4.7.1 کے تحت معطل کیا گیا، پی سی بی یہ طے کرے کہ کسی بھی فریق کو اینٹی کرپشن کوڈ کے تحت چارج کرنا ہے یا  فریق کسی بھی فوجداری جرم میں ملوث ہو جس میں پولیس کی جانب سے گرفتار کیا گیا ہو یا پھر کوئی الزام عائد کیا گیا ہو۔

پی سی بی کے پاس یہ صوابدیدی اختیار موجود ہے کہ وہ کھیل کی ساکھ کو مجروح کرنے پر متعلقہ فریق کو اینٹی کرپشن کوڈ کے تحت عبوری طور پر معطل کرسکتا ہے جب تک کہ اینٹی کرپشن ٹربیونل یہ فیصلہ نہ کرلے کہ متعلقہ فریق نے جرم کا ارتکاب کیا ہے یا نہیں۔

عبوری طور پر معطلی سے متعلق کسی بھی فیصلے کی ایک تحریری کاپی متعلقہ فریق ، آئی سی سی اور قومی کرکٹ بورڈ کو بھجوائی جائے گی۔

WhatsApp FaceBook

آپ کے تبصرے

Your email address will not be published.

متعلقہ خبریں
WhatsApp FaceBook
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube