ہوم   > Latest

ورلڈ کپ میں باؤنڈریز کی بنیاد پرشکست، کیوی کوچ کا آئی سی سی کو مشورہ

SAMAA | - Posted: Jul 16, 2019 | Last Updated: 7 months ago
SAMAA |
Posted: Jul 16, 2019 | Last Updated: 7 months ago

آئی سی سی ورلڈکپ کے سنسنی خيز فائنل کے بعد زيادہ باؤنڈريز کی بنیاد پر انگلينڈ کو چیمپئن قرار دینے پر کيوی ٹيم کے ہيڈ کوچ نے مایوسی کا اظہارکیا کرتے ہوئے آئی سی سی سے کہا ہے کہ مستقبل میں 100 اوورز میں بھی فیصلہ نہ ہو تو دونوں ٹیموں کو فاتح قرار دیا جائے۔،

آئي سی سی نے ورلڈ کپ کے چيمپيئن کا فيصلہ تکنيکي بينادوں پر کيا جس پر کيوی ٹيم کے ہيڈ کوچ گيری اسٹيڈ کا موقف ہے کہ بہتر ہوتا اگر دونوں ٹيموں کو فاتح قرار ديا جاتا ۔

نيوزي لينڈ کے ہيڈ کوچ گيري اسٹيڈ کہنا ہے کہ يہ بات سمجھ سے بالاتر ہے کہ 50 اوورز کے کھيل کا فيصلہ ايک اوور پرکيسے کيا جاسکتا ہے۔ جن قوانین کے مطابق سات ہفتے ورلڈ کپ کھیلا جاتا رہا، تو آخری دن کے لیے نیا قانون کیوں بنا؟۔

باؤنڈریز کی بنیاد پر شکست سے دل گرفتہ کوچ نے مزید کہا کہ بہت سي چيزوں کا دوبارہ جائزہ لينا چاہئے جس کيلئے يہی صحيح وقت ہے۔

گيري اسٹيڈ نے آئي سي سي کو مشورہ ديا کہ مستقبل ميں فائنل ميں اگر100 اوورز ميں بھی فيصلہ نہ ہوسکے تو دونوں ٹيموں کو فاتح قرار ديا جائے ۔

دوسري جانب انگلش بورڈ کے ڈائريکٹرايشلے جائلز کا کہنا ہے اوورتھرو پر 6 رنز کے تنازع کی کوئي پرواہ نہيں۔ ہم ورلڈ چيمپيئن ہیں۔ ہم نے ٹرافي جيتي ہے اور ہم اسے برقرار رکھنا چاہتے ہيں۔

یاد رہے کہ 27 سال بعد کرکٹ ورلڈ کپ کا فائنل کھیلنے والی انگلینڈ کرکٹ ٹیم نیوزی لینڈ کو شکست دے کر چیمپئن بنی ہے۔ جب انگلش ٹیم کو242 رنز کے ہدف کے تعاقب میں 15 رنز درکار تھے توایسا لگ رہا تھا کہ اب انگلینڈ کی جیت ناممکن ہےمگر84 رنز کی ناقابل شکست اننگز کھیلنے والےاسٹوکس نے آخری 4 گیندوں پر 14 رنز بنائے۔ میچ ٹائی ہوگیا اور فیصلے کیلئے سپر اوور دیا گیا۔ حیرت انگیز طور پر سپر اوور میں بھی میچ برابر رہا۔

میچ برابر ہونے پر آئی سی سی قوانین کے تحت زائد باؤنڈریز کی وجہ سے انگلینڈ کو فاتح قرار دیا گیا جبکہ بین اسٹوکس مین آف دی میچ قرار پائے۔

WhatsApp FaceBook

آپ کے تبصرے

Your email address will not be published.

 
متعلقہ خبریں
 
WhatsApp FaceBook
 
 
 
 
 
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube