ومبلڈن مینز،راجر فيڈرر اور نواک جوکووچ کے درمیان آج فائنل ہوگا

July 14, 2019

سوئٹزرلینڈ سے تعلق رکھنے والے مایہ ناز ٹینس کھلاڑی راجر فیڈرر نے سنسنی خیز مقابلے کے بعد اپنے سب سے بڑے حریف، اسپین کے رافیل نڈال کو 11 سال بعد شکست دے کر ومبلڈن کے فائنل میں جگہ بنا لی ہے، جہاں ان کا مقابلہ سربیا کے عالمی نمبر ایک نوواک جوکووچ سے ہوگا۔

دونوں کھلاڑیوں کے مابین اب تک 47 میچ کھیلے جا چکے ہیں جن میں سے 22 میں فیڈرر اور 25 میں جوکووچ کو کامیابی حاصل ہوئی ہے۔ البتہ آخری دس مقابلوں میں سے آٹھ مقابلے جوکووچ نے جیتے ہیں۔

 

سیمی فائنل میں فیڈرر نے نڈال کو ایک کے مقابلے میں تین سیٹس سے شکست دی تھی۔ سیمی فائنل میں نڈال اور فیڈرر کے درمیان میچ 3 گھنٹے اور 2 منٹ تک جاری رہا۔

فیڈرر ایک ماہ بعد 38 برس کے ہو جائیں گے اور وہ 1974 میں کین روزوال کے بعد فائنل کھیلنے والے سب سے عمر رسیدہ کھلاڑی بن جائیں گے۔ ان کی عمر نے انھیں ریکارڈ 12ویں مرتبہ ومبلڈن کے فائنل تک رسائی سے نہیں روکا لیکن انھوں نے نڈال کے خلاف جیت کے بعد اپنے جذبات پر قابو رکھا۔

فیڈرر کے پاس گراس کورٹ پر سب سے زیادہ 19 ٹائٹلز کا اعزاز موجود ہے۔ فیڈرر اور نڈال کے درمیان گراس کورٹ گرینڈ سلیم میں سنہ 2008 کے بعد سے پہلا میچ ہے۔ اس میچ میں نڈال کامیاب ہوئے۔

ان تینوں ( نڈال، فیڈرر اور نوواک ) کھلاڑیوں نے اب تک 53 گرینڈ سلیم ٹائٹل جیت رکھے ہیں اور بہت جلد 54واں بھی جیت لیں گے۔