اگر مگر کا چکر، ورلڈ کپ کی فائنل 4 ٹیمیں کون سی ہوں گی؟

June 25, 2019

کرکٹ کو محنت کے ساتھ ساتھ قمست کا کھیل بھی کہا جاتا ہے، بعض اوقات جیت کے قریب آکر کوئی ٹیم ہار کا مزا چکھ لیتی ہے تو کئی بار ایسا بھی ہوا کہ یقینی شکست فتح میں تبدیل ہوجاتی ہے۔

پاکستان کرکٹ ٹیم کو معاملہ بھی کچھ ایسا ہی ہے جو توقعات کے برعکس کردکھانے میں پیش پیش رہتی ہے، 92 کے ورلڈ کپ کی طرح کرکٹ شائقین توقع رکھے ہوئے ہیں کہ ٹیم اس بار پھر سیمی فائنل تک رسائی حاصل کر لے گی۔

سیمی فائنل تک تو 4 ٹیمیں پہنچیں گی اور اس اگرمگر کے چکر میں گرین شرٹس کے بھی فائنل 4 میں ہونے کے چانسز ہیں۔ شاہینوں نے جنوبی افریقہ کو شکست دے کر کر ایک رکاوٹ تو عبورکرلی لیکن رن ریٹ ابھی تک منفی میں ہی چل رہا ہے جس کے لیے پاکستان کو اب اگلے تینوں میچز جیتنا ہوں گے۔

تاحال پاکستان نے 6 میچز کھیل کر 5 پوائنٹس حاصل کر رکھے ہیں جن میں انگلینڈ اور جنوبی افریقہ کیخلاف فتح کے 4 پوائنٹس اور بارش کے باعث سری لنکا کے ساتھ ب میچ نہ ہونے پر ملنے والا 1 پوائنٹ شامل ہے۔ پوائنٹس ٹیبل پرپاکستان کا ساتواں نمبر ہے۔

پاکستان کرکٹ ٹیم کے اگلے 3 میچز 26 جون کو نیوزی لینڈ، 29 کو افغانستان اور 5جولائی بنگلہ دیش کے ساتھ شیڈول ہیں اور اگر سیمی فائنل میں جگہ بنانی ہے تو ہر صورت میں تینوں میچز جیتنے ہوں گے۔

سیمی فائنل تک جانے کےلئے اگر سرفراز الیون نے اگلے 3 میچز جیت لیے تو پاکستان کے 11 پوائنٹس ہوجائیں گے۔

دوسری جانب سیمی فائنل کیلئے بھارت اور نیوزی لینڈ کی پوزیشن مضبوط ہے جبکہ افغانستان کو شکست دیکر بنگلادیش بھی اس دوڑ میں شامل ہے۔

اگرمگر کی صورتحال کا جائزہ لیں تو پاکستان کی راہ میں سب سے بڑی رکاوٹ انگلینڈ اور آسٹریلیا ہیں، کینگروز اگر اپنے تینوں میچ ہارے تو گرین شرٹس کو فائدہ پہنچے گا ، اسی طرح سے انگلینڈ کو بھی مزید 2 میچز میں شکست ہوئی تو اس صورت میں بھی پاکستان فائنل 4 میں جگہ بنا لے گا۔