ورلڈ کپ اسکواڈ میں شامل نہ کرنے پر محمد عامر اور اہلیہ کا ردعمل

April 19, 2019

ورلڈ کپ 2019 کے لیے گزشتہ روز 15 رکنی اسکواڈ کا اعلان کیا گیا جس میں فاسٹ بالر محمد عامر کا نام شامل نہیں ہے۔ ٹیم کا اعلان کیے جانے کے بعد عامر نے بجائے غم و غصہ دکھانے کے سماجی رابطوں کی ویب سائٹ پر انتہائی مثبت پیغام دیا۔

گزشتہ روز ٹیم اناؤنس کیے جانے کےموقع پر چیف سیلکٹر انضمام الحق کا کہنا تھا کہ محمد عامر اور آصف علی کو دورہ انگلینڈ کے کیلئے منتخب کیا گیا ہے، ہمارے پاس ورلڈ کپ اسکواڈ میں 22 مئی تک تبدیلی کا آپشن موجود ہے۔

جس کے بعد سماجی رابطوں کی ویب سائٹ ٹوئٹر پر محمد عامر نےاپنی ٹویٹ میں لکھا کہ انگلینڈ کیخلاف ٹیم میں شامل کیے جانے پر شکر گزار ہوں، انشاء اللہ سو فیصد کارکردگی دکھاؤں گا۔

عامر نے ورلڈ کپ 2019 کی ٹیم کے لیے نیک خواہشات کا اظہار کرتے ہوئے مزید لکھا کہ ’’انشاء اللہ ٹرافی پاکستان آئے ، اپنی ٹیم کو سپورٹ کریں‘‘۔

دوسری جانب عامر کی اہلیہ نرجس نے ان کی ٹویٹ کو ری ٹویٹ کرتے ہوئے لکھا کہ ’’ اللہ تعالیٰ ہمیشہ آپ کے ساتھ رہے، وہ سب سے بہترین منصوبہ ساز ہے‘‘۔

عامر سے متعلق چیف سلیکٹر کا کہنا تھا کہ وہ بہت تجربہ کار بولر ہے لیکن بدقسمتی سے کافی عرصے سے پرفارم نہیں کر پا رہا، اسی لیے عامر کونگلینڈ کے لیے ٹیم میں شامل کیا ہے۔ اللہ کرے کہ جس طرح عامر نے چیمپئنز ٹرافی کے فائنل میں بھارت کی ابتدائی وکٹیں گرائی تھیں، ویسی ہی فارم میں آ جائے۔

فاسٹ بالر کے مداحوں نے بھی ورلڈ کپ اسکواڈ میں ان کی عدم شمولیت پر شدید مایوسی کا اظہارکیا اور امید ظاہر کی کہ وہ انگلینڈ میں عمدہ کارکردگی دکھا کر ورلڈ کپ میں ضرور ایکشن میں دکھائی دیں گےْ

ورلڈ کپ میں محمد عامر کی شمولیت پر سوالیہ نشان لگ گیا

بائیں ہاتھ سے بولنگ کرنے والے محمد عامر راولپنڈی کی تحصیل گوجرخان کے نواحی گاؤں چنگا بنگیال میں 13 اپریل 1992 کو پیدا ہوئے۔ کیریئر کا آغازسال 2009 میں سری لنکا کےخلاف ون ڈے اور ٹیسٹ سیریز میں کیا جبکہ 2009 میں ہی انگلینڈ کےخلاف ٹی ٹوئنٹی سیریز میں ڈیبیو کیا۔

میں بہت خوش قمست ہوں

اگست 2010 میں اسپاٹ فکسنگ اسکینڈل میں عائد 5 سال کی پابندی کے بعدجنوری 2015 میں عامر کو ڈومیسٹک کرکٹ کھیلنے کی اجازت ملی اور اسی سال بنگلہ دیش پریمیئر لیگ کا حصہ بنے۔ 2016 میں نیوزی لینڈ کےخلاف سیریز میں پاکستان ٹیم میں واپسی ہوئی۔محمد عامر اب تک ٹیسٹ میں 119، ون ڈے میں 60 اور ٹی ٹوئنٹی میں 55 وکٹیں حاصل کر چکے ہیں۔