پاکستان، آسٹریلیا کا پہلا ٹیسٹ سنسنی خیز مقابلے کے بعد ڈرا ہوگیا

October 11, 2018

پاکستان اور آسٹریلیا کی کرکٹ ٹیموں کے درمیان کھیلا گیا پہلا ٹیسٹ میچ دلچسپ مقابلے کے بعد برار ہوگیا، آسٹریلوی اوپنر عثمان خواجہ نے 141 رنز کی شاندار اننگز کھیلی۔


پاکستان کے 462 رنز ہدف کے تعقب میں آسٹریلوی ٹیم نے میچ کے آخری روز 136 رنز تین کھلاڑی نقصان پر بیٹنگ شروع کی اور کھانے کے وقفے تک کوئی وکٹ نہ گرنے دی۔ عثمان خواجہ اور ٹریوس ہیڈ نے ٹیم کا اسکور 219 رنز تک پہنچایا۔

وقفے کے بعد آسٹریلیا کی چوتھی وکٹ گری جس کے بعد ٹیم کے بقیہ کھلاڑی وقفے وقفے سے آوٹ ہونے لگے، لیکن دوسری طرف اوپنر عثمان خواجہ نے پاکستانی بالرز کا ڈٹ کر مقابلہ کیا اور 141 رنز کی بہترین اننگز کھیلی۔

آسٹریلیا کیخلاف ٹیسٹ میچ جیتنے کیلئے پاکستان کو 7 وکٹوں کی ضرورت

عثمان خواجہ کے آوٹ ہونے کے بعد پاکستان ٹیم کی جیت یقینی لگنے لگی تاہم کپتان ٹم پین نے ٹیم کو سہارا دیتے ہوئے شکست سے بچا لیا۔

آسٹریلوی ٹیم 8 وکٹوں کے نقصان پر 362 رنز بنا سکی۔ ایرون فنچ 49، شان اور مچل مارش صفر، ٹریوس ہیڈ 72، لیبس ہینگ 13، اسٹارک ایک اور سڈل صفر پر آوٹ ہوئے، جبکہ کپتان ٹم پین 61 اور لیون 5 رنز بنا کر ناٹ آوٹ رہے۔

میچ میں بہترین کارکردگی پیش کرنے پر عثمان خواجہ کو مین آف دی میچ ایوارڈ دیا گیا۔ عثمان خواجہ نے پہلی اننگز میں 85 اور دوسری اننگز میں 141 رنز بنائے۔

پاکستان کی جانب سے فاسٹ بالر محمد عباس نے سات اور ڈیبیو کرنے والے آف اسپنر بلال آصف نے چھ وکٹیں حاصل کیں۔