آخری اوورز میں نوجوان کھلاڑی اچھی بولنگ نہیں کرسکے

By: Samaa Web Desk
September 14, 2017

لاہور: پاکستان کرکٹ ٹیم کے کوچ مکی آرتھر کا کہنا تھا کہ نوجوان ٹیم ہے نئے کھلاڑیوں کو زیادہ مواقع دے رہے ہیں تا کہ ورلڈکپ سے قبل ایک اچھی ٹیم بن سکے۔

قذافی اسٹیڈیم میں میچ کے بعد میڈیا گفتگو کرتے ہوئے ان کہنا تھا کہ 175 ایک اچھا اسکور تھا اور ہماری باﺅلنگ سائیڈ کو اس کا دفاع کرنا چاہئے تھا مگر آخری پانچ اوورز میں ہماری باﺅلنگ لائن انڈر پریشر اچھا پرفارم نہیں کرسکی۔

عثمان شنواری سے متعلق سوال کے جواب میں ان کا کہنا تھا کہ انہیں ایک اوور دینے کا مطلب یہ نہیں کہ وہ ایک اچھا باﺅلر نہیں وہ ایک اچھا باﺅلر ہے اور اس کا مستقبل کافی روشن ہے۔ دوسرے میچ میں ورلڈ الیون کی طرف سے ہاشم آملہ بہت اچھا کھیلا آخر میں تشارا پریرا نے بھی اچھی بیٹنگ کی۔ ہمارے باﺅلرز سے اچھے یارکر نہیں ہو سکے۔

محمد عامر سے متعلق پوچھے گئے سوال کے جواب میں ان کا کہنا تھا کہ واقعی فرق تو پڑتا ہے مگر مواقع دینے سے ہی نئے لڑکوں کی صلاحیتوں کا پتہ چلتا ہے۔

عمر امین سے متعلق پوچھے گئے سوال کے جواب میں ان کا کہنا تھا کہ ہر ٹیم میں ریزور باﺅلر ہوتا ہے ہماری ٹیم میں عمر امین ہے ضرورت پڑنے پر ضرور کھلائیں گے۔ حسن علی اگلے میچ میں ضرور ہوگا۔ ہم نے دیکھنا ہے کہ ہم نے آگے مسلسل کرکٹ کھیلنی ہے۔ دوسرے میچ میں چند آسان کیچز چھوڑے اور کچھ رنز فالتو دیئے جس سے میچ پر بہت فرق پڑ۔ فائنل کے لئے بھرپور تیاری کے ساتھ میدان میں اتریں گے۔ اے پی پی

Email This Post
 
 

آپ کے تبصرے

Your email address will not be published.