Sunday, January 16, 2022  | 12 Jamadilakhir, 1443

گلگت بلتستان ونٹرگیمز:کہیں غیرمقامی سیاحوں کوخطرہ تو نہیں؟ 

SAMAA | - Posted: Jan 13, 2022 | Last Updated: 3 days ago
SAMAA |
Posted: Jan 13, 2022 | Last Updated: 3 days ago

گلگت بلتستان میں ایک نجی اسپورٹس کلب نے حکومت کے تعاون سے13  جنوری سے صوبہ کے مختلف علاقوں میں سرمائی کھیلوں کے مقابلوں کا آغاز کردیا جو ایک ہفتہ تک جاری رہے گا۔

منتظمین کے مطابق  قراقرم وینٹر لووڈ سپورٹس سیزن فور میں آئس ہاکی، آئس کلائمبنگ، مونٹین سائکلنگ اورگلیشیر واک کے مقابلوں میں گلگت بلتستان سمیت چترال کے علاوہ کینیڈا سے بھی ٹیمیں شرکت کریں گی۔

ایک ہفتے تک جاری رہنے والے مقابلوں میں 10 ٹیمیوں کے 346 مرد و خواتین کھلاڑی اپنی صلاحیتوں کا مظاہرہ کریں گے جبکہ کھیلوں کے علاوہ ایونٹ میں میوزیکل فیسٹیول کا انعقاد بھی ہوگا۔ 

ایونٹ کی افتتاحی تقریب التت میں ہزار سالہ قدیم تالاب پر منعقد ہوں گی جبکہ ایونٹ کے دیگر مقابلے گوجال، التت، عطاء آباد جھیل سمیت جی بی کے مخلتف علاقوں میں منعقد ہوں گے۔

ایونٹ کے منتظمین اگرچہ مقابلوں کے کامیاب انعقاد کے لیے پر عزم ہے تاہم محکمہ موسمیات کے مطابق گلگت بلستان میں 17 سے 23  جنوری تک مسلسل برف باری کا امکان ہے اور اس سلسلے میں سیاحوں کو بالائی علاقوں کے سفر سے گریز کی ہدایت بھی کردی گئی ہے۔

خطرناک پہاڑی علاقوں میں حادثات سےبچنے کی آسان تدابیر

محکمہ داخلہ گلگت بلتستان حکومت کے مطابق اس دوران علاقے میں صرف فور بائی فور گاڑیوں کو داخلے کی اجازت ہوگی جبکہ مقامی افراد کو بھی برفباری کے دوران غیرضروری سفر سے گریز اور لینڈ سلائیڈنگ والی جگہوں پر نہ جانے کی ہدایت کی گئی ہے۔

ہوٹلز مالکان کو رات 10 بجے کے بعد گیس ہیٹر بند کرنے جبکہ ٹرانسپورٹرز کو سنو چین لگوانے اور بیلچہ ساتھ رکھنے کی بھی ہدایت کی گئی ہے۔

جہاں ابھی سانحہ مری اب تک لوگوں کے ذہنوں میں تازہ ہے وہی برفباری کی پیشگوئی کے باوجود اس قسم کا ایونٹ اگرچہ نارمل حالات میں خوش آئند ہے مگر ایسے مخصوص حالات میں غیرمقامی سیاحوں کے لیے اس ایونٹ میں شرکت شائد خطرے سے خالی نہ ہو۔ 

سماء ڈیجیٹل سے گفتگو کرتے ہوئے ایونٹ ڈائریکٹر محمد ہادی کا کہنا تھا کہ ایونٹ میں 12 ٹیمیں شرکت کریں گی اور ہزاروں سیاحوں کی آمد متوقع ہے جبکہ بہت سارے سیاح پہلے سے ہی پہنچ چکے ہیں۔ 

محمد ہادی کا کہنا تھا کہ اس ایونٹ کا انعقاد مقامی کاروباری برادری کی معاونت سے کیا جا رہا ہے جس میں ہمیں حکومت کا بھی تعاون حاصل ہے۔

انہوں نے کہا حفاظتی انتظامات کے حوالے سے مقامی انتظامیہ کے ساتھ سارے معامالت طے ہوچکے ہیں اور اس سلسلے میں تمام ضروری اقدامات کیے جا رہے ہیں۔

محمد ہادی کا مزید کہنا تھا کہ ہم نے کسی کو شرکت کے باضابطہ دعوت نہیں دی ہے سیاح اپنی ذمہ داری پر آئیں گے اور جہاں تک رہائشی ہوٹلوں کی بات ہے تو ان کے ریٹس وغیرہ کا معاملہ بھی سیاحوں اور ہوٹل مالکان کی افہام و تفہیم پر منحصر ہوگا۔

وزیرسیاحت گلگت بلتستان راجا ناصر علی خان نے سماء ڈیجیٹل کو بتایا کہ سانحات تو ہوتے رہتے ہیں ہمارے ہاں بھی زلزلے آئے ہیں مگر ہم اس خوف سے اسپورٹس ایونٹس کو نہیں روک سکتے۔

راجا ناصر علی خان کا کہنا تھا کہ ہم ایونٹ کے کامیاب انعقاد کےلیے بلکل تیار ہیں اور تمام ضروری اقدامات کر لیے گئے ہیں۔ ان کا مزید کہنا تھا کہ مری میں جو ہوا اس پر ہمیں بیحد افسوس ہے لیکن خدشات کی بنیاد پر کھیلوں کے ایوننٹس پر پابندی نہیں عائد کی جاسکتی۔ 

انہوں نے کہا کہ مختلف ایونٹس الگ الگ علاقوں میں منعقد ہوں گے جن میں آئس ہاکی چیمپین شپ بھی شامل ہے جو گلگت بلتستان میں پہلی مرتبہ منقعد کی جا رہی ہے اور اس میں پورے ملک سے ہزاروں افراد کی آمد متوقع ہے۔ 

WhatsApp FaceBook
تازہ ترین
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube