Friday, January 28, 2022  | 24 Jamadilakhir, 1443

سرديوں کے بعد مہنگائی نيچے آنے کی اميد ہے، وزیراعظم

SAMAA | - Posted: Dec 8, 2021 | Last Updated: 2 months ago
SAMAA |
Posted: Dec 8, 2021 | Last Updated: 2 months ago

وزیراعظم عمران خان کا کہنا ہے کہ موسم سرما کے بعد اشیاء خورونوش کی قیمتیں کم ہو جائیں گی لیکن فی الحال مہنگائی کا بوجھ کم کرنے کے لیے ہم نے احساس راشن کا پروگرام شروع کیا۔

پشاور میں احساس راشن پروگرام کی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے وزیراعظم عمران خان نے کہا کہ احساس راشن پروگرام کے لیے 120ارب روپے رکھے اور فیصلہ کیا کہ تقریباً نصف خاندان کو 30فیصد کم پہ آٹا، گھی اور دالیں دی جائیں تاکہ لوگوں کی مشکلات کم ہوں۔

وزیراعظم نے کہا کہ 50ہزار روپے سے کم آمدنی والے افراد خود کو اس  پروگرام میں رجسٹرڈ کروائیں جبکہ کریانہ اسٹور کو بھی نیشنل بینک کے ساتھ رجسٹرڈ کروائیں تاکہ سہولیات جلد از جلد فراہم کی جا سکیں۔

مہنگائی میں اضافے کی وجہ بتاتے ہوئے وزیراعظم نے کہا کہ دنیا میں لاک ڈاؤن کی وجہ سے سپلائی چین بند ہوگئی جس سے چیزوں کی کمی ہوگئی اور قیمتیں بڑھ گئیں۔ تیل، کوئلہ اور گیس سمیت دیگر اشیاء کی قیمتیں بڑھ گئیں۔ مہنگائی پر قابو پانے کے لیے جو کرسکتے تھے ہم نے کیا۔

انہوں نے کہا کہ عالمی جریدوں کا دعویٰ ہے کرونا کے دوران پاکستان وہ واحد ملک ہے جس نے کرونا سے بھی بچایا اور معیشت کو بھی جبکہ ہمارے مقابلے میں بھارت میں زیادہ غربت آئی۔

وزیراعظم نے کہا کہ کامیاب پاکستان پروگرام بھی شروع ہو رہا ہے جس میں نچلے طقبے کے 20لاکھ خاندانوں کو چار چیزیں دیں گے جس میں بغیر سود 5لاکھ روپے کا قرضہ، ٹیکنیکل ایجوکیشن، 27لاکھ روپے گھر کے لیے بغیر سود قرضہ اور ہیلتھ کارڈ شامل ہیں۔

انہوں نے کہا کہ ملک میں ٹیکسوں کی مدد سے جمع ہونے والی زیادہ تر رقم قرضوں پر سود دینے میں ہی نکل جاتی ہے لیکن جلد معاملات بہتر ہوں گے اور غریبوں کو مزید فائدہ پہنچائیں گے۔ اسوقت، خیبر پختونخوا میں 47ارب روپے کی 63 لاکھ اسکالر شپ دےرہے ہیں۔

وزیراعظم نے کہا کہ 2018 میں جب حکومت ملی تو مجھے خوشی ہوئی کیونکہ وزیراعلیٰ محمود خان نے فیصلہ کیا کہ صوبے کے ہر خاندان کو ہیلتھ انشورنس دینی ہے۔ پنجاب کو بھی یہی کہا کہ وہ بھی یہ سہولت دیں۔

انہوں نے بتایا کہ پنجاب میں یکم جنوری سے ہیلتھ کارڈ دے رہے ہیں اور تین مہینے میں پورے پنجاب کو ہیلتھ انشورنس ملے گی۔ ہیلتھ انشورنس سفید پوش سمیت غریب کے لیے بڑی نعمت ہے۔ جہاں جہاں ہماری حکومت ہے وہاں سب نے ہیلتھ انشورنس دینے کا فیصلہ کیا ہے جس سے 10لاکھ روپے تک کسی بھی اسپتال میں جاکر علاج کروایا جا سکتا ہے۔

وزیراعظم عمران خان کا کہنا تھا کہ 25 سال قبل جب پارٹی کی بنیاد رکھی تو ہمارے منشور میں یہ شامل تھا کہ پاکستان کو اسلامی فلاحی ریاست بنانا ہے اور میری کوشش تھی جب بھی اقتدار ملا تو یہ کام پورا کروں گا۔ ابتدا میں ہمیں خیبر پختونخوا میں مخلوط حکومت ملی تو لوگوں نے کہا کہ یہاں کے عوام دوبارہ موقع نہیں دیتے لیکن سب نے دیکھا ہمارے کاموں کی وجہ سے دوبارہ موقع ملا۔

انہوں نے کہا کہ خیبر پختونخوا کے عوام نے دوبارہ ہمیں موقع دیا کیونکہ یہاں کے لوگ شعور رکھتے ہیں، اس لیے ہمیں دو تہائی اکثریت ملی۔ یو این ڈی پی کی رپورٹ کے مطابق 2013 سے 2018 کے درمیان خیبر پختونخوا میں غربت تیزی سے کم ہوئی۔

وزیراعظم کا کہنا تھا کہ شوکت خانم اسپتال صرف اپنی والدہ کی وجہ سے بنایا تاکہ غریب ایسے اسپتال میں جائے جہاں کینسر کا علاج کیا جا سکے۔

خطاب سے قبل، وزیراعظم نے کامیاب پاکستان پروگرام کے تحت مائیکرو ہیلتھ انشورنس پروگرام کا اجراء اور چیک تقسیم کیے۔ کے پی کے 75لاکھ خاندانوں کو 10لاکھ تک صحت کی مفت سہولیات ملیں گی۔

WhatsApp FaceBook
تازہ ترین
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube