Tuesday, January 18, 2022  | 14 Jamadilakhir, 1443

ملک میں روایتی بینکنگ کی کوئی گنجائش ہی نہیں،سابق اٹارنی جنرل انورمنصور

SAMAA | - Posted: Dec 3, 2021 | Last Updated: 2 months ago
Posted: Dec 3, 2021 | Last Updated: 2 months ago

ملک سےسود کے خاتمے کیلئے وفاقی شرعی عدالت میں دائر درخواستوں پرعدالتی معاون انورمنصور خان نے دلائل مکمل  کرلیے ہیں۔

وفاقی شرعی عدالت میں جمعہ کو سودی نظام  کے خلاف عدالتی معاون انور منصور خان کےدلائل مکمل ہوگئے ہیں۔ انورمنصور نے کہا کہ ملک میں روایتی بینکنگ کی کوئی گنجائش ہی نہیں اور دنیا سودی نظام سے دور جا رہی ہے۔ سابق اٹارنی جنرل نے کہا کہ ملک سے ربا کے خاتمے کیلئے بھی اسٹیٹ بینک کی سمت درست ہےلیکن حکومت رکاوٹ ہے۔

دوران سماعت جماعت اسلامی کے رہنما پروفیسرابراہیم نے کہا کہ یہ ثابت ہوچکا ہے کہ بینکنگ انٹرسٹ ربا ہے لیکن حکومت بینکنگ انٹرسٹ کو ربا تسلیم کرنے کو تیار ہی نہیں۔

پروفیسر ابراہیم نےاستدعا کی کہ عدالت حکومت کو اپنے اعتراضات ثابت کرنے کیلئے ٹائم لائن دے۔

چیف جسٹس نور محمد مسکانزئی نے ریمارکس دیئے کہ اٹارنی جنرل کے دلائل کے بعد تمام فریقین کو سنا جائے گا، اگر کسی معاملے میں تشنگی ہوئی تو سوالات فریقین کے سامنے رکھ کر جواب لیں گے۔

اس کیس پر9 دسمبر کی آئندہ سماعت پر بابر اعوان بطور عدالتی معاون دلائل دیں گے۔

WhatsApp FaceBook
تازہ ترین
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube