Wednesday, January 19, 2022  | 15 Jamadilakhir, 1443

لاہور:10 ماہ میں ہزاروں وارداتیں،پرچے کیوں نہیں کٹے؟

SAMAA | - Posted: Dec 2, 2021 | Last Updated: 2 months ago
Posted: Dec 2, 2021 | Last Updated: 2 months ago

لاہور ميں 10 ماہ کے دوران لوٹ مار کی وارداتیں اور ديگر سنگين جرائم تو ہوئے ليکن مقدمات درج نہيں کيے گئے تاہم افسران کی تبدیلی سے صورتحال بھی تبدیل ہوگئی۔

کيپيٹل سٹی پوليس مبینہ طور پر جرائم کے ہزاروں واقعات گول کر گئی تھی اور اس معاملے میں کینٹ ڈويژن سرفہرست رہی جہاں 4 ہزار 2 سو واقعات کی ايف آئی آر درج نہیں کی گئیں۔

اسٹريٹ کرائم کی ایک ہزار 360 وارداتیں ہوئیں۔ موٹرسائيکل چوری اور چھيننے کے 4 ہزار 413 واقعات ہوئے اور ڈکیتی و رہزنی کی 2 ہزار 380 وارداتيں ہوئیں ليکن مقدمہ ايک کا بھی درج نہ کيا گیا۔

گزشتہ افسران جرائم کے کیسز درج کرنے سے کتراتے رہے تاکہ کرائم ریٹ نیچے رہے اور کارکردگی کا گراف اوپر نظر آئے۔

تاہم جب افسران کی تبديلی ہوئی تو زیر التواء ایف آئی آرز دھڑا دھڑ کاٹے جانے کا سلسلہ شروع ہوگیا۔ نئے کمانڈر نے درخواستوں کو ريکارڈ ميں لانے کا حکم جاری کيا اور اب تک 16 ہزار 500 سے زائد مقدمات درج کيے جاچکے ہيں اور یہ سلسلہ ہنوز جاری ہے۔

نئی کمان نے مقدمات کے اندراج کا سلسلہ شروع کر کے سابقہ افسران کی کارکردگی پر بھی سوالات اٹھا دیے ہیں ليکن ايک ماہ کے دوران 4 افراد کا دوران واردات قتل اور لوٹ مار کی 100 سے زائد وارداتیں ہوچکی ہيں اور شہری تحفظ کا مطالبہ کررہے ہیں۔

WhatsApp FaceBook
تازہ ترین
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube