Friday, January 28, 2022  | 24 Jamadilakhir, 1443

یوٹیلیٹی اسٹورزعوام کی صحت سےکیسے کھیلے،آڈٹ رپورٹ کےانکشافات

SAMAA | - Posted: Nov 29, 2021 | Last Updated: 2 months ago
SAMAA |
Posted: Nov 29, 2021 | Last Updated: 2 months ago

یوٹیلٹی اسٹورز کی جانب سے بلیک لسٹ کی جانے والی فلور ملوں سے آٹا خریدنے کے ساتھ ساتھ عوامی ریلیف کے نام پر غیر معیاری گھی اور مہنگی چینی خریدنے کا بھی انکشاف ہوا ہے۔

آڈیٹر جنرل کے رپورٹ کے مطابق صارفین کو ایک ارب 40 کروڑ روپے کا غیر معیاری گھی اور کوکنگ آئل کھلایا گیا۔ رپورٹ نے یوٹیلیٹی سٹورز کارپوریشن کے حکام کی بے حسی اور سرکاری خزانے کے بے دریغ استعمال کا بھانڈا پھوڑ دیا۔

رپورٹ کے مطابق یوٹیلیٹی سٹورز کارپوریشن نے عوام کی صحت اور قومی خزانے کے خیال سے قطع نظر 2 بلیک لسٹڈ کمپنیوں بابا فلور ملز اور نیو اورکزئی ٹریڈرز سے 7 کروڑ 71 لاکھ کا آٹا خرید کر عوام کو کھلا دیا۔

رپورٹ کے مطابق بغیر فٹنس سرٹیفکیٹ ایک ارب 40 کروڑ روپے کا غیرمعیاری اور مضرصحت گھی اور کوکنگ آئل خرید کر بھی عوام کی صحت سے کھیلا گیا جبکہ 3 لاکھ میٹرک ٹن چینی بروقت نہ خریدنے سے بھی قومی خزانے کو ایک ارب 37 کروڑ روپے کا نقصان ہوا۔

مارکیٹ ریٹ سے 3 روپے 24 پیسے مہنگی چینی خریدنے سے قومی خزانے کو 10 کروڑ روپے کا نقصان ہوا جبکہ حکومت سے سبسڈی کے نام پر 7 کروڑ 82 لاکھ روپے الگ سے وصول کیے گئے۔

آڈٹ حکام کے مطابق کرونا وباء کے دوران یوٹیلٹی اسٹورز کارپوریشن کو 10 ارب روپے کی خصوصی گرانٹ ملی جس میں سے 5 ارب 20 کروڑ روپے کی مالی بے ضابطگیاں سامنے آئیں۔

آڈیٹر جنرل نے ذمہ داروں کا تعین کرکے ادارے کا انٹرنل کنٹرول سسٹم بہتر بنانے، ای پروکیورمنٹ سسٹم اور 4 سال سے زیر التواء انٹرپرائز ریسورس پلاننگ سسٹم نافذ کرنے کی سفارش کر دی ہے۔

WhatsApp FaceBook
تازہ ترین
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube