Friday, January 28, 2022  | 24 Jamadilakhir, 1443

ڈی سی منڈی بہاؤالدین اوراسسٹنٹ کمشنرکی سزا معطل

SAMAA | - Posted: Nov 29, 2021 | Last Updated: 2 months ago
SAMAA |
Posted: Nov 29, 2021 | Last Updated: 2 months ago

LHC

لاہور ہائیکورٹ  نے صارف عدالت کے جج کی جانب سے ڈپٹی کمشنر منڈی بہاؤالدین اوراسسٹنٹ کمشنر کو3 ماہ قید کی سزا کو معطل کردیا ہے۔

صارف عدالت کےجج کی جانب سےڈی سی منڈی بہاؤالدین کوسزا دینے کے کیس کی سماعت ہوئی۔ چیف جسٹس لاہور ہائیکورٹ جسٹس محمد امیر بھٹی نے ڈپٹی کمشنر کی درخواست پر سماعت کی۔

درخواست گزارنےموقف اختیار کیا کہ ڈی سی منڈی بہاؤالدین کوقانون سے ہٹ کرسزا سنائی گئی۔درخواست گزارکے وکیل نےعدالت کوبتایا کہ فاضل جج کو بغیر ٹرائل سزا دینے کا اختیار نہیں ہے اور فاضل جج 2 ہزار روپے تک جرمانہ یا ایک ماہ قید کی سزا دے سکتا تھا۔

عدالت نے صارف عدالت کے جج کی جانب سے 3 ماہ قید کی سزا کو معطل کردیا۔عدالت نے کاروائی کرتے ہوئے فریقین کونوٹسز جاری کرتے ہوئے جواب طلب کرلیا ہے۔صارف عدالت منڈی بہاؤالدین کے جج نے ڈی سی کو توہین عدالت کیس میں 3 ماہ قید کی سزا سنائی تھی۔

عدالت نے ایڈوکیٹ جنرل سے استفسار کیا کہ کیا آپ کے افسران کورٹس کوچلانا نہیں چاہتے۔ فاضل جج نے بتایا ہے کہ آپ کےافسرنےکلرک کوبھیج کرفاضل جج کی بےعزتی کروائی۔فاضل جج نےڈی سی منڈی بہاؤالدین سے استفسار کیا کہ آپ نے جج کوکال کیوں کی۔چیف جسٹس لاہورہائیکورٹ نے استفسار کیا کہ تم کوعدالت نے بلوایا ہے،تم نے کس حثیت میں جج صاحب کو کال کی۔ڈی سی منڈی بہاؤ الدین نے جواب دیا کہ اس دن چھٹی پر تھا اورمیرا اس کیس سے تعلق نہیں ہے۔

چیف جسٹس نےریمارکس دئیے کہ یہاں ہربندہ کہتا ہے کہ میرے سے بڑا عقل مند نہیں ہے،قانون کا اس بندے کو پتہ نہیں ہے اور وہ بیٹھ کر باتیں بڑی بڑی کررہا ہے۔چیف جسٹس نے مزید کہا کہ اگرعدالت قانون کےبرعکس کام کررہی تھی توآپ اپیل میں آجاتے،یہ تونہیں کہ آپ عدالت میں جا کراختیاراستعمال کرنا شروع کردیں۔

گذشتہ ہفتے صارف عدالت کےجج راؤعبدالجبار کی عدالت میں ایک شہری محمد عاصم حسین نے درخواست دائر کی کہ واپڈا کالونی سرکاری کوارٹر کی الاٹمنٹ ضلعی انتظامیہ نے  ایک سرکاری ٹیچر حسن علی کے نام کردی ہے۔ انتظامیہ نے محمد عاصم سے زبردستی سرکاری مکان خالی کروا لیا جو کہ غیر آئینی اور غیر قانونی عمل تھا۔

درخواست گزار نے صارف عدالت کو بتایا تھا کہ متعدد بار ڈی سی اور اے سی کو نوٹس بھیجوائے گئے مگر عدالت کے حکم کی تعمیل نہ کی گئی اورانھوں نے اپنی جگہ پر کلرک رانا محبوب کوعدالت بھیجوا دیا۔ ڈی سی کے کلرک نےعدالت کے ساتھ بدتمیزی کی اور عدالت کے اختیارات کو چیلنج کیا۔

بعد ازاں ڈی سی منڈی بہاؤالدین طارق بسرا نے جج راؤ عبدالجبار کو ٹیلی فون کیا اور کہا کہ میرے کلرک کو چھوڑ دیں اور اسے جانے دیں جس پر عدالت نے ایک دن کی مہلت دیتے ہوئے  ڈی سی منڈی بہاؤالدین طارق علی بسرا اور اے سی امتیاز بیگ کو ذاتی حیثیت میں طلب کرلیا اور جواب طلبی کی۔

دونوں افسران عدالت کو مطمئن نہ کرسکےجس پر عدالت نے دونوں افسران کے ہتک آمیز رویہ پر تین تین ماہ کی سزا سنا کر جیل بھیجوانے کا حکم جاری کردیا اورپولیس نےان افسران کو گرفتار کرکے جوڈیشنل ریمانڈ پر جیل بھیجوا دیا۔

WhatsApp FaceBook
تازہ ترین
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube