Thursday, January 27, 2022  | 23 Jamadilakhir, 1443

راولپنڈی کی نفیسہ:خود معذور لیکن دوسروں کا سہارا

SAMAA | - Posted: Nov 28, 2021 | Last Updated: 2 months ago
SAMAA |
Posted: Nov 28, 2021 | Last Updated: 2 months ago

انسان معذور ہو جائے توعموماً دوسروں کا محتاج بن جاتا ہے لیکن کچھ لوگ ایسے بھی ہیں جنھیں یہی معذوری دوسروں کا دُکھ درد محسوس کرنے کا راستہ دکھاتی ہے۔

راولپنڈٰی کی 34 سالہ نفیسہ راشد گزشتہ دس سال سے خود وہیل چیئر پر ہیں لیکن انہوں نے اس معذوری کو زندگی کا روگ بننے کے بجائے مستحق خواتین کی مدد کو اپنی خوشی کا ذریعہ بنا لیا۔

کسی کے لیے راشن کا انتظام تو کسی مریض کے علاج کا بندوبست، مشکلات کی کڑی دھوپ میں غریب اور بیوہ خواتین کے لیے نفیسہ راشد چھاؤں کی حیثیت رکھتی ہیں۔

نفیسہ راشد کا کہنا ہے کہ چلتے پھرتے تو انسان کو نظر نہیں آتا لیکن جب معذور ہو جاتا ہے تو اسے پتہ چلتا ہے کہ دوسرے لوگ کس مشکل میں ہیں۔ ایک بیوہ خاتوں کا کہنا ہے کہ والدہ بیمار ہیں تین بچوں کا اکیلی ذمہ دار ہوں، نفیسہ باجی ہر مسئلے میں ہماری مدد کرتی ہے۔

نفیسہ نے یہ کار خیر شروع  تو اپنی جیب سے کیا لیکن آہستہ آہستہ اُن کی معاونت کے لیے  اور بھی لوگ ان کے قافلے میں  شریک ہوتے گئے۔

انسان اچانک معذور ہو جائے تو وہ اپنے لیے سہارے تلاش کرتا ہے لیکن نفیسہ کو ایسے وقت میں بھی بے سہاروں کی تلاش تھی جو صحت مند لوگوں کے لیے کسی مثال سے کم نہیں۔

WhatsApp FaceBook
تازہ ترین
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube