Tuesday, November 30, 2021  | 24 Rabiulakhir, 1443

ایف آئی اے نے ملک میں بڑھتے سائبر کرائمز کی اصل وجہ بتادی

SAMAA | - Posted: Nov 26, 2021 | Last Updated: 5 days ago
SAMAA |
Posted: Nov 26, 2021 | Last Updated: 5 days ago

قائمہ کمیٹی انفارمیشن ٹیکنالوجی کے اجلاس میں انکشافات

ایف آئی اے نے نادرا کا بائیو میٹرک ڈیٹا ہیک ہونے کا انکشاف کرتے ہوئے اسے ملک میں بڑھتے سائبر فراڈ کی بنیادی وجہ قرار دیا ہے۔

ایڈیشنل ڈائریکٹر سائبر کرائم ونگ طارق پرویز کا کہنا ہے کہ مالیاتی فراڈ میں کسی کو پکڑنے جاتے ہیں تو وہاں کوئی کوئی بوڑھا شخص یا اَن پڑھ خاتون نکلتی ہیں۔ انہوں نے یہ انکشافات قومی اسمبلی کی قائمہ کمیٹی انفارمیشن ٹیکنالوجی کے اجلاس میں کیے۔

ایف آئی اے سائبر کرائم ونگ کے ایڈیشنل ڈائریکٹر نے بتایا کہ بائیو میٹرک ڈیٹا ہیک ہونے سے ہیکرز بآسانی فراڈ کرتے ہیں۔

کسی کو لاٹری لگنے کی خوشخبری تو کسی کو بینظیر انکم سپورٹ پروگرام سے امداد منظور ہونے کا لالچ دیا جاتا ہے۔ اور تو اور بینک کا نمائندہ بن کر شہریوں کی حساس معلومات تک رسائی کی کوششوں جیسے فراڈ بھی بڑھنے لگے ہیں۔

واضح رہے کہ ایک روز قبل چیئرمین نادرا طارق ملک نے ڈیٹا ہیک ہونے کی تردید کی تھی۔ انہوں نے کہا تھا کہ ہم خوش قسمت ہیں کہ ہمارے ٹولز ایسے ہیں کہ ابھی تک ہمارا ڈیٹا بریچ نہیں ہوا اور اس حوالے سے جو باتیں عام ہیں وہ قصے کہانیاں ہیں۔ انہوں نے مزید کہا تھا کہ ہاں کچھ انفرادی کیسز ہو جاتے ہیں تاہم ایسی صورت میں سخت ایکشن لیا جاتا ہے۔

ماہرین کی نظر میں نادرا کا ڈیٹا ہیک ہونا معمولی بات نہیں بلکہ اس کے نتائج نہایت خطرناک ہوسکتے ہیں۔

ماہرسائبر امور ہارون احمد کا کہنا ہے کہ یہ ڈیٹا مس یوز ہوسکتا ہے۔ یہ بہت سے سائبر کرائز، چوری کے مقاصد حتیٰ کہ یہ دہشتگردی میں بھی استعمال ہوسکتا ہے۔

چیئرمین پی ٹی اے عامر عظیم باجوہ  کے مطابق کسی موبائل فون کمپنی کوگھر گھر جا کر سم فروخت کرنےکی اجازت نہیں ہے۔ ان کا یہ بھی کہنا ہے کہ غیرقانونی طریقے سے لوگوں کے انگوٹھے کے نشان لیے جاتے ہیں۔ انہوں نے بتایا کہ ایک سال میں 2 موبائل آپریٹرز پر 15 کروڑ روپے کا جرمانہ عائد کیا جاچکا ہے۔

WhatsApp FaceBook
تازہ ترین
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube