Monday, January 24, 2022  | 20 Jamadilakhir, 1443

خواتین کووراثت سےمحروم کرنا غیرشرعی اورمکروہ عمل ہے،سپریم کورٹ

SAMAA | - Posted: Nov 20, 2021 | Last Updated: 2 months ago
Posted: Nov 20, 2021 | Last Updated: 2 months ago

سپریم کورٹ نے خواتین کو وراثت سے محروم کرنا غیر شرعی اور مکروہ عمل قرار دے دیا ہے۔عدالت نے باپ کی وراثت سے بیٹیوں کی حصہ دینے کی اپیل منظورکرلی۔

خواتین کو وراثت میں حق دینے سے متعلق سپریم کورٹ نے فیصلہ سنادیا ہے۔ سپریم کورٹ نے پشاور ہائیکورٹ کا فیصلہ کالعدم کردیا ہے جبکہ باپ کی جائیداد میں حصے کے لیے بیٹیوں کی اپیل منظور کرلی گئی ہے۔عدالت نے قراردیا کہ بیٹیوں کو وراثت میں حصہ نہ دینا غیرشرعی مکروہ اور قابل نفرت عمل ہے۔

خواتین کووراثت میں حق اپنی زندگی میں ہی لیناہوگا،سپریم کورٹ

جسٹس قاضی فائزعیسی کی جانب سے جاری کردہ تحریری فیصلے میں کہا گیا ہے کہ فراڈ اور دیگر حربوں سےخواتین کو ان کے حق سے محروم رکھنا معمول بن چکا ہےجواللہ کے حکم کی خلاف ورزی ہے۔ کوئی جرگہ بھی قرآن کے اصولوں کیخلاف وراثت میں حصے کا فیصلہ کرنے کا مجاز نہیں۔

خواتین کووراثت سے محروم رکھنے سے متعلق کیس کافیصلہ سنادیاگیا

واضح رہے کہ خیبر پختونخوا کے شہری حبیب خان کی بیٹیوں نے والد کی جائیداد سے حصہ نہ ملنے کے خلاف اپیل دائر کررکھی تھی۔حبیب خان کی تیسری اہلیہ نے دعوی کیا تھا کہ شوہر نے تمام جائیداد اسے حق مہر میں دے دی تھی جس کے بعد سابق شوہرسےاس کے 2 بچے سوتیلی بہنوں کو وراثت میں حصہ دینے سے انکاری تھے۔ فیصلے کے مطابق نکاح نامے سے یہ دعوی ثابت نہیں ہوسکا۔

WhatsApp FaceBook
تازہ ترین
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube