Tuesday, January 18, 2022  | 14 Jamadilakhir, 1443

زلفی بخاری نےملک میں اِن ہاؤس تبدیلی کے امکانات کو رد کردیا

SAMAA | - Posted: Nov 13, 2021 | Last Updated: 2 months ago
SAMAA |
Posted: Nov 13, 2021 | Last Updated: 2 months ago

پاکستان تحریک انصاف کے رہنما زلفی بخاری نے ملک میں ان ہاؤس تبدیلی کے امکانات کو رد کردیا اور کہا کہ عمران خان کو نکال کر کون سی پی ٹی آئی چل سکتی ہے۔

وزیر اعظم کے قریبی ساتھی زلفی بخاری نے سماء کو خصوصی انٹرویو دیتے ہوئے بتایا ہے کہ ان ہاؤس تبدیلی کی باتیں نا قابل برداشت ہیں اور کیا اپوزیشن سمجھتی ہے کہ عمران خان جانے پر تیار ہوجائیں گے اور پی ٹی آئی نیا وزیر اعظم قبول کرکے بیٹھے تماشا دیکھتے رہے گی؟۔زلفی بخاری نے مزید کہا کہ عمران خان کو نکال کر بھلا کون سی پی ٹی آئی چل سکتی ہے؟۔

اپنی وزارت سے متعلق زلفی بخاری نے کہا کہ وزارت سے استعفیٰ  کے بعد وزیر اعظم سے کبھی وزارت کی بات کی اور نہ کروں گا۔ رنگ روڑ انکوائری میں  سرخرو ہوا اور یہ تحقیقات صرف بکواس تھی کیوں کہ انکوائری میں اینٹی کرپشن والوں کے اپنے بھی مقاصد تھے۔

پی ٹی آئی رہنما نے کہا کہ بیورو کریٹک نظام کی وجہ اوورسیز میں کام رکے ہوئے ہیں۔ وسیم خان اور مجھ سمیت کسی اوورسیز پاکستانی کو کچھ نہیں ملا۔

حزب اختلاف سے متعلق زلفی بخاری کا کہنا تھا کہ اپوزیشن والے ہر 6 ماہ،12 ماہ بعد نکلنے والی چیونٹیوں جیسے ہیں اورہر 12 مہینے بعد ان کیلئے اسپرے کرنا پڑتا ہے۔ بلاول بھٹو اور مولانا فضل الرحمان نظریاتی اختلاف رکھنے والے ہیں اور وہ ایک ساتھ کیسے چل سکتے ہیں، بائیں بازو کے بلاول کا دائیں بازو کے مولانا فضل الرحمان سے بھلا کیا لینا دینا؟۔ انھوں نے یہ بھی کہا کہ اپوزیشن کا کھیل عوام میں حکومت سے متعلق غیر یقینی پھیلانا ہے جبکہ بلاول اور فضل الرحمان کا مشترکہ مقصد جمہوریت نہیں بلکہکرپشن ہے۔

زلفی بخاری نے یہ بھی کہا کہ  پاکستان مسلم لیگ نون کی رہنما مریم نواز جب نکلتی ہیں تو والد میاں نواز شریف کی سیاست مزید خراب کردیتی ہیں۔

WhatsApp FaceBook
تازہ ترین
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube