Wednesday, December 8, 2021  | 3 Jamadilawal, 1443

رحیم یارخان:9 افراد کےقتل میں ملوث گینگ کےمبینہ سہولت کارگرفتار

SAMAA | - Posted: Oct 26, 2021 | Last Updated: 1 month ago
SAMAA |
Posted: Oct 26, 2021 | Last Updated: 1 month ago

صادق آباد میں 9 افراد کے قتل کے بعد پولیس کے ٹارگٹڈ آپریشن کے دوران اندھڑ گینگ سے منسلک  8 مبینہ سہولت کاروں کو گرفتار کرلیا گیا ہے۔

صادق آباد میں اندھڑ گینگ کے خلاف گذشتہ ایک ہفتے سے آپریشن جاری ہے۔ منگل کو پولیس نے ایس پی انوسٹی گیشن کی سربراہی میں بھاری نفری کے ہمراہ متعلقہ علاقوں میں انٹیلیجنس بیسڈ انفارمیشن کے تحت ٹارگٹڈ آپریشن کیا جس میں اندھڑ گینگ سے منسلک 8 مبینہ سہولت کاروں کو گرفتار کرلیا گیا۔

ان افراد کو نامعلوم مقام پرمنتقل کرکے تفتیش کی جارہی ہے۔ڈسٹرکٹ پولیس آفیسرعلی ضیاء کا کہنا ہے کہ ایس پی انوسٹی گیشن کی سربراہی میں قاتلوں کی گرفتاری کیلئےانٹیلیجنس بیسڈ ٹارگٹڈ آپریشن  جاری ہے اورجدید ٹیکنالوجی اور ڈرون کیمروں سے مدد لی جارہی ہے۔اس آپریشن میں ایس پی انوسٹی گیشن،ڈی ایس پی سی آئی اے اورایلیٹ فورس سمیت پولیس کی بھاری نفری شامل ہے۔

ڈی پی او رحیم یار خان کے مطابق کچے میں 9 پولیس کیمپ قائم کردیے گئے ہیں جن میں 300 سے زائد اہلکار، ایلیٹ فورس کے جوان تعینات ہیں۔حالات کے پیش نظرحفاظتی طور پرجائے وقوعہ اور مقتولین کے گھروں کے باہر پولیس کے چاق وچوبند جوان تعینات کردئیے گئے۔سرحدی چیک پوسٹ داعو والا پر بکتر بند گاڑیوں سمیت نفری بڑھا دی گئی جبکہ تھانہ بھونگ، احمد پورلمہ، کوٹسبزل اورتھانہ ماچھکہ کے علاقوں میں پولیس کا گشت جاری ہے۔

پولیس کا کہنا ہے کہ گینگ کے خلاف کاروائیوں کیلئے تمام وسائل کو بروئے کارلارہے ہیں اورعلاقے میں قیام امن کیلئے ہرممکن اقدامات اٹھائے جارہے ہیں۔ورثاء کے مطالبہ پرسابق افسران کے خلاف اعلی سطح پرانکوائری کا فیصلہ کرلیا گیا ہے۔

اس سے قبل لواحقین اور علاقہ مکینوں نے اندھڑ گینگ کے خلاف بیان دیا کہ شرپسند عناصر ماہی چوک کی 60 فیصد سے زائد دکانوں اور کاروباری افراد سے ماہانہ بھتہ وصول کرتے تھے اور انکار کرنے پراغواء کرکے جان سے مارنے کی دھمکیاں دی جاتی تھیں۔ انھوں نے یہ بھی بتایا کہ اندھڑ گینگ نے پیٹرول پمپ پر قتل ہونے والے مقتول خاندان سے بھی بھاری رقم وصول کی اور مزید رقم کا مطالبہ کیا جس حوالے سے ان سے بات چیت جاری تھی۔

رکن پنجاب اسمبلی ممتاز چانگ نے بتایا تھا کہ انڈھڑ گينگ کے خلاف بات کرنے پر انھیں دھمکياں مل رہی ہيں۔رحیم یارخان میں پچھلے ہفتے ممتازچانگ نے انڈھڑ گينگ کے خلاف پریس کانفرنس کی تھی جس کے بعد انھیں اور ان کے اہل خانہ کو دھمکیاں ملنا شروع ہوئیں۔ پوليس کا کہنا ہے کہ ممتازچانگ کو سيکيورٹی فراہم کردی گئی ہے۔ممتاز چانگ نے دو ٹوک کہا ہے کہ ان دہشت گردوں کے خلاف بھرپور آپريشن کيا جائے۔ضلع ميں نئی پوليس سے پُراميد ہيں کہ وہ کارروائی کرے گی اورسابقہ نااہل پوليس افسران انجام کو پہنچیں گے۔

 صادق آباد کے ماہی چوک میں 9 افراد کا قتل:۔

صادق آباد میں اتوار 10 اکتوبر کو ہونے والی  قتل کی واردات میں مسلح ڈاکوؤں نے پیٹرول پمپ پر دن کے وقت دھاوا بول دیا۔ فوٹیج میں 3 ڈاکو ہاتھوں میں اسلحہ لیے دیکھے جاسکتے ہیں جنھوں نے پہلے پمپ مالکان سے تکرار کی اور جس کے بعد فائرنگ کرکے ان تمام افراد کو قتل کردیا۔

انڈھڑ گینگ کے کارندوں کی فائرنگ سے ہر طرف بھگدڑ مچ گئی اور لوگ جان بچا کر بھاگتے رہے۔شرپسندوں نے مسجد سے نماز پڑھ  کرآنے والے افراد کوبھی گولیاں ماریں جبکہ راہ گیر بھی فائرنگ کی زد میں آئے۔

رحیم یارخان:9افراد کا قتل،ہڑتال کے بعد ڈی پی او اسد سرفراز تبدیل

فوٹیج میں یہ بھی دیکھا گیا ہے کہ فائرنگ کے بعد پیڑول پمپ کے اطراف سناٹا چھاگیا اور ڈاکوبا آسانی فرار ہونے میں کامیاب ہوگئے۔

مدعی خوف کا شکار:۔

 جس شخص کی مدعیت میں اس واقعے کا مقدمہ درج کیا گیا تھا اس کوڈاکوؤں کی جانب سے دھمکیاں موصول ہونے پر اس نے کیس سے دستبردار ہونے کا فیصلہ کیا۔عدم تحفظ کا شکار مقتولین کے ورثاء علاقہ چھوڑنے پر مجبور ہوگئے۔ڈاکوؤں کی فائرنگ سے زخمی ہونے والے شخص نے بتایا تھا کہ ان کی کسی سے کوئی دشمنی نہیں اور وہ اپنا کاروبار کرتے ہیں۔10 اکتوبر کی دوپہرعلاقہ مکینوں نے مقتولین کی لاشیں سندھ اور بلوچستان سے پنجاب آنے والی شاہراہ پررکھ کراحتجاج کرتے ہوئے انصاف کی اپیل کی۔

ڈی پی او تبدیل:۔

صادق آباد میں 9 افراد کے قتل کے بعد شہر بھر میں ہڑتال اور احتجاجی مظاہرے کئے گئے اور مظاہرین کے دباؤ پر ڈی پی او رحیم یار خان اسد سرفراز کو تبدیل کرتے ہوئے کیپٹن ریٹائرڈ علی ضیاء ڈی پی او کا چارج سنبھالنے کا حکم جاری کیا گیا۔

 جنوبی پنجاب کے ایڈیشنل آئی جی نے صادق آباد میں قتل ہونےوالے مقتولین کے ورثاء سے اظہار تعزیت کرتے ہوئے کہا تھا کہ اس سانحہ پر محکمہ پولیس شرمسار ہے اور قاتلوں کو کیفرکردار تک پہنچانے تک پولیس چین سے نہیں بیٹھے گی۔ایڈیشنل آئی جی نے مقتولین کے ورثاء کو قاتلوں کے خلاف کاروائی کی یقین دہانی کروائی تھی۔

صادق آباد:9افراد کا قتل،مدعی کا کیس سے دستبردار ہونےکافیصلہ

وزیراعلی پنجاب عثمان بزادر کے نوٹس کے بعد ایڈیشنل انسپکٹر جنرل پولیس جنوبی پنجاب کیپٹن ریٹائرڈ ظفراقبال اعوان نے متعلقہ ڈی ایس پی سرکل صادق آباد عباس اختر، ایس ایچ اوتھانہ کوٹ سبزل صفدر سندھو اور چوکی انچارج کو معطل کردیا تھا۔ ایس پی انوسٹی گیشن ارسلان شاہزیب کی جگہ دوست محمد کو نیا ایس پی انوسٹی گیشن رحیم یار خان تعینات کیا گیا۔

WhatsApp FaceBook
تازہ ترین
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube