Friday, December 3, 2021  | 27 Rabiulakhir, 1443

پنڈورالیکس:پاکستان کی آئی سی آئی جے سےمعلومات فراہم کرنےکی درخواست

SAMAA | - Posted: Oct 20, 2021 | Last Updated: 1 month ago
SAMAA |
Posted: Oct 20, 2021 | Last Updated: 1 month ago

وزیراعظم معائنہ کمیشن نے انٹرنیشنل کنسورشیم آف انویسٹیگیٹو جرنلسٹس (آئی سی آئی جے)  سے پنڈورالیکس سے متعلق معلومات فراہم کرنے کی درخواست کی ہے۔

کمیشن کی طرف سے جاری کردہ اعلامیہ میں کہا گیا ہے درخواست میں پاکستانیوں کی آف شور کمپنیز سے متعلق معلومات کی فراہمی شامل ہے۔ کمیشن کا کہنا ہے کہ تمام تحقیقات حقائق پر مبنی ہوں گی کوئی اور ادارہ بھی معلومات دینا چاہے تو دے سکتا ہے۔

اعلامیہ میں کہا گیا ہے کمیشن احتساب،شفافیت اورگڈگورننس پریقین رکھتا ہے اور تمام تحقیقات حقائق پر مبنی ہوں گی۔\

واضح رہے کہ پنڈورا پیپرز میں 700 سے زائد پاکستانیوں کی آف شور کمپنیاں سامنے آگئی تھیں۔

پنڈورا پیپرز میں وزیرخزانہ شوکت ترین، وفاقی وزیرمونس الٰہی اور سینیٹر فیصل واؤڈا کی آف شور کمپنیاں سامنے آئیں۔ اس کےعلاوہ آئی سی آئی جے کی تحقیقات میں مسلم لیگ ن کے رہنما اسحاق ڈار کے بیٹے، پیپلز پارٹی کے شرجیل میمن اور وفاقی وزیرصنعت خسرو بختیار کی اہل خانہ کی آف شور کمپنیاں بھی سامنے آئیں۔

وفاقی وزیرصنعت خسرو بختیار کے بھائی عمر بختیار نے سن 2018 میں ایک آف شور کمپنی کے ذریعے لندن کے علاقے چیلسی میں 1 ملین ڈالر کا اپارٹمنٹ اپنی والدہ کو منتقل کیا تھا۔

پنڈورا پیپرز نے انکشاف کیا ہے کہ سن 2007 میں سابق صدر جنرل پرویز مشرف کے اس وقت کے معاون جنرل شفاعت اللہ شاہ کی اہلیہ نے لندن میں 12 لاکھ ڈالر کی  مالیت کا ایک اپارٹمنٹ غیرملکی لین دین کے ذریعے حاصل کیا۔ علاوہ ازیں لیکس میں آرمی کے ایک ریٹائرڈ لیفٹیننٹ کرنل اور سابق وزیر راجہ نادر کا نام بھی شامل ہے۔

WhatsApp FaceBook
تازہ ترین
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube