Sunday, December 5, 2021  | 29 Rabiulakhir, 1443

وزارت انفارمیشن ٹیکنالوجی اورپی ٹی اے نےنئےسوشل میڈیارولزتیارکرلئے

SAMAA | - Posted: Oct 13, 2021 | Last Updated: 2 months ago
SAMAA |
Posted: Oct 13, 2021 | Last Updated: 2 months ago

وزارت انفارمیشن ٹیکنالوجی اور پی ٹی اے نے نئے سوشل میڈیا رولز تیار کرلئے ہیں۔

وفاقی کابینہ نے نئے سوشل میڈیا رولز کی گزشتہ اجلاس میں منظوری بھی دے دی ہے۔ وزارت انفارمیشن ٹیکنالوجی جلد نئے سوشل میڈیا رولز کا نوٹیفکیشن جاری کرے گی۔

نئے رولز میں تمام اسٹیک ہولڈرز اورشہریوں کی تجاویز شامل کی گئی ہیں۔ نئے سوشل میڈیا رولزکو “ریمول اینڈ بلاکنگ ان لاء فل آن لائن کنٹینٹ رولز 2021 رکھا گیا ہے۔

اس سے قبل جاری کردہ رولز کوسوشل میڈیا کمپنیوں نےچیلنج کردیا تھا۔ نئےرولزمیں پیکا ایکٹ 2016 کے سیکشن 37 اورسیکشن 51 کوملایا گیا ہے۔نئے سوشل میڈیا رولز میں رولز بنانے سے متعلق اتھارٹی کے لئے تمام رکاوٹوں کوختم کردیا گیا ہے۔ نئے رولز میں نوٹس کے اجراء، کیسز اور کارروائی کی وضاحت کی گئی ہے۔

نئے رولز میں یہ بھی بتایا گیا ہے کہ یہ رولز لاگو ہونے پرتمام سوشل میڈیا کمپنیاں خود کو 3 ماہ میں پی ٹی اے کے ساتھ رجسٹر کروانے اور سوشل میڈیا فورمز 6 ماہ کے اندر اپنے مستقل دفاتر کھولنے کی پابند ہوں گی۔

نئے رولز کےمطابق تمام سوشل میڈیا فورمز پاکستان میں ایک کمپلائنس آفیسر اور گرینونس آفیسر مقرر کریں گی اور دونوں افسران کی تقرری 3 ماہ میں عمل میں لائی جائے گی۔ گرینونس آفیسر شکایت کےاندراج کے7 روز میں مسئلے کا حل دینے کا پابند ہوگا۔سوشل میڈیا کمپنیاں آن لائن شکایت کا میکنزم اور کمیونٹی گائیڈ لائنزجاری کریں گی۔

اس کےعلاوہ رولز کی خلاف ورزی پر سوشل میڈیا کمپنیوں کو بھاری جرمانےعائد کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔ رولز کی خلاف ورزی کرنے پرسوشل میڈیا کمپنیوں کو 50 کروڑ روپے تک جرمانہ ہوسکے گا۔ سوشل میڈیا کمپنیاں مقامی قوانین کی پاسداری کی پابند ہوں گی۔ شکایات کے اندراج کا میکنزم اور فارم بھی رولز میں شامل کئے گئے ہیں۔

WhatsApp FaceBook
تازہ ترین
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube