Friday, October 22, 2021  | 15 Rabiulawal, 1443

خواتین کووراثت میں حق اپنی زندگی میں ہی لیناہوگا،سپریم کورٹ

SAMAA | - Posted: Sep 23, 2021 | Last Updated: 4 weeks ago
Posted: Sep 23, 2021 | Last Updated: 4 weeks ago

SUPREME COURT

سپریم کورٹ نےخواتین کی وراثت کے حوالے سے فیصلے دیتے ہوئے کہا ہے کہ خواتین کو وراثت میں حق اپنی زندگی میں ہی لینا ہوگا۔

سپریم کورٹ نے خواتین کی وراثت کے حوالے سے فیصلہ سناتے ہوئے کہا ہے کہ خواتین کو وراثت میں حق اپنی زندگی میں ہی لینا ہوگا۔خواتین زندگی میں اپنے حق نہ لیں توان کی اولاد دعوی نہیں کرسکتی۔

جسٹس عمر عطا بندیال نے ریمارکس دئیے ہیں کہ قانون وراثت میں خواتین کے حق کو تحفظ فراہم کرتا ہے، دیکھنا ہوگا کہ خواتین خود اپنے حق سے دستبردار ہوں یا دعوی نہ کریں تو کیا ہوگا۔

اس کے علاوہ سپریم کورٹ نے پشاور کی رہائشی خواتین کے بچوں کا نانا کی جائیداد میں حق دعوی مسترد کردیا ہے۔ پشاور کے رہائشی عیسی خان نے 1935 میں اپنی جائیداد بیٹے عبدالرحمان کو منتقل کردی تھی۔ عیسی خان نے اپنی دونوں بیٹیوں کوجائیداد میں حصہ نہیں دیا تھا اوردونوں بہنوں نے اپنی زندگی میں وراثت نامہ کوچیلنج نہیں کیا تھا۔

دونوں خواتین کے بچوں نے 2004 میں نانا کی وراثت میں حق دعوی دائر کیا تھا اور سول کورٹ نے بچوں کے حق میں فیصلہ دیا تھا جس کو ہائیکورٹ نے کالعدم قراردےدیا تھا۔ سپریم کورٹ نے پشاور ہائیکورٹ کا  سال 2017 کا فیصلہ برقرار رکھا ہے۔

WhatsApp FaceBook
تازہ ترین
 
 
 
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube