Friday, October 22, 2021  | 15 Rabiulawal, 1443

امریکا کے ساتھ وسیع البنیاد تعلقات کے خواہشمند ہیں، وزیرخارجہ

SAMAA | - Posted: Sep 21, 2021 | Last Updated: 1 month ago
SAMAA |
Posted: Sep 21, 2021 | Last Updated: 1 month ago

وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی کا کہنا ہے کہ افغان جنگ کے خاتمے پر امریکا کے ساتھ وسیع البنیاد تعلقات کا خواہاں ہیں، نائن الیون کے بعد پاکستان اور امریکا نے مل کر دہشت گردی کا مقابلہ کیا۔

نیویارک میں اقوام متحدہ جنرل اسمبلی کے 76ویں اجلاس کے موقع پر ’’کونسل آن فارن ریلیشنز‘‘ سے خطاب میں وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے کہا کہ پاکستان اور امریکا نے مل کر دہشت گردی کیخلاف جنگ لڑی ہے، پاکستان، افغان جنگ کے خاتمے پر امریکا کے ساتھ وسیع البنیاد تعلقات کا خواہاں ہے۔

وزیر خارجہ کا کہنا تھا کہ امریکا افغانستان میں اپنے بنیادی اہداف حاصل کرچکا، افغانستان کی صورتحال ہر ایک کی نظر میں ہے، وہاں امریکا کا مزید رہنا بے معنی تھا۔

انہوں نے کہا کہ عالمی برادری افغانستان کو تنہا چھوڑنے کی غلطی نہ دہرائے بلکہ ممکنہ انسانی بحران سے نمٹنے کیلئے افغان عوام کی فوری مدد یقینی بنائے، جب طالبان کابل کی طرف پیشرفت کررہے تھے تو اشرف غنی حکومت سوشل میڈیا پر نفرت پھیلارہی تھی۔

وزیر خارجہ نے یہ بھی کہا کہ اشرف غنی حکومت کی کرپشن کے سبب اسلحہ بردار افغان فوج کے حوصلے پست ہوئے، بھارت نے مقبوضہ جموں کشمیر میں مظالم برپا کر رکھے ہیں، پاکستان کیلئے امریکا اہم اتحادی کی حیثیت رکھتا ہے۔

شاہ محمود قریشی نے کہا کہ دونوں ملکوں کے درمیان تعلقات کو مزید وسعت دینے کی گنجائش موجود ہے، پاکستان کابل سے امریکی فوج کے انخلاء کے بعد انسداد دہشتگردی اور افغانستان کے مسئلے پر تعاون کے علاوہ امریکا کے ساتھ مضبوط تعلقات چاہتا ہے۔

ان کا کہنا ہے کہ پاکستان علاقائی تجارت اور اقتصادی ترقی کیلئے چین پاکستان اقتصادی راہداری سمیت رابطوں کے دیگر منصوبوں سے استفادہ کرنا چاہتا ہے۔

شاہ محمود قریشی نے کہا کہ اس سلسلے میں امریکا اہم شراکت دار ہوگا، پاکستان کی ماحول دوست توانائی پالیسی سے صاف اور قابل تجدید توانائی کے شعبے میں امریکی کمپنیوں کیلئے بڑے مواقعے موجود ہیں۔

WhatsApp FaceBook
تازہ ترین
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube