Monday, November 29, 2021  | 23 Rabiulakhir, 1443

حکومتی وزراء کی ایک بار پھر چیف الیکشن کمشنر پرتنقید

SAMAA | - Posted: Sep 20, 2021 | Last Updated: 2 months ago
SAMAA |
Posted: Sep 20, 2021 | Last Updated: 2 months ago

وزیر ریلوے اعظم سواتی نے چيف اليکشن کمشنر کو کھلا چيلنج دے ڈالا، بولے چند روز میں قانون بناکر دکھائیں گے، آپ کس کے کہنے پر کھلواڑ کررہے ہیں، آپ بڑے میاں کی جیب کی گھڑی اور ہاتھ کی چھڑی ہیں، الیکشن کمیشن اور آئین کا پاس نہ ہوتا تو کبھی آپ کی تقرری نہ ہوتی۔ بابر اعوان نے بڑا دعویٰ کرديا، کہا کہ اپوزیشن کی جانب سے پارلیمانی کمیٹی بنانے کا مطالبہ مان لیا گيا ہے۔

اسلام آباد میں وفاقی وزیر ریلوے اور مشیر پارلیمانی امور نے پریس کانفرنس کرتے ہوئے ایک بار پھر چیف الیکشن کمشنر سکندر سلطان راجا پر کڑی تنقید کی۔

اعظم سواتی کا کہنا تھا کہ چند دنوں میں قانون بناکر دکھائیں گے، آپ کس کے کہنے پر کھلواڑ کر رہے ہیں، آپ بڑے میاں کی جیب کی گھڑی اور ہاتھ کی چھڑی ہیں، الیکشن کمیشن اور آئین کا پاس نہ ہوتا تو کبھی آپ کی تقرری نہ ہوتی، کئی راز ہیں لیکن حلف لیا ہوا ہے بتا نہیں سکتا، آپ حکومت کا مقابلہ کرو گے تو ہم سیسہ پلائی دیوار بن کر کھڑے ہیں۔

بابر اعوان نے بتایا کہ حکومت اور حزب اختلاف مثبت بات چیت کے ٹریک پر رواں دواں ہیں۔ انہوں نے کہا کہ ہم ان سے پچھلے ہفتے ملے تھے، انہوں نے اعتماد سازی کیلئے ہمیں پارلیمان کی مشترکہ کمیٹی بنانے کا کہا، ہم اس کی تحریک لائیں گے اور کمیٹی بنے گی۔

ان کا کہنا تھا کہ اپوزیشن کو ہم آگے بڑھ کر اس کا حصہ بنا رہے ہیں لیکن یہ طے ہے کہ ایسا نہیں ہوگا ہم کچھ بھی نہ کریں۔

حکومتی نمائندوں کا کہنا تھا کہ الیکٹرانک ووٹنگ مشین کوئی نیا تصور نہیں، 2014ء سے 16 تک یہی اپوزیشن الیکشن کمیشن کیساتھ ملکر اس پر کام کرتی رہی، ایک بار قانون سازی مکمل ہوگئی تو پھر سب کو ماننا ہی پڑے گا۔

WhatsApp FaceBook
تازہ ترین
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube