Friday, January 21, 2022  | 17 Jamadilakhir, 1443

مہنگےداموں ڈیسک کی خریداری، سعیدغنی نے فیصلہ درست قراردیدیا

SAMAA | - Posted: Sep 17, 2021 | Last Updated: 4 months ago
SAMAA |
Posted: Sep 17, 2021 | Last Updated: 4 months ago

سندھ کے سرکاری اسکولوں میں 29 ہزار کی ڈیسک خریداری کےفیصلے کو سابق صوبائی وزیر تعلیم سعید غنی نے درست قراردے دیا۔

گزشتہ دنوں سعید غنی نے کہا تھا کہ وزیراعلیٰ سندھ مراد علی شاہ اگر معاملے کی تحقیقات کرانا چاہتے ہیں تو کرالیں جبکہ انہوں نے ساتھ ہی کہا کہ میری خواہش ہے معاملہ ختم ہوجائے تاکہ سوال جواب کی نوبت ہی نہ آئے۔

سعید غنی کے دور میں 29 ہزار کی ڈیسک خریداری کا فیصلہ کیا تھا وہ اس وقت صوبائی وزیر تعلیم تھے، انہوں نے کہا کہ اعتراض کرنے والے نیب میں چلے جائیں۔ اس حوالے سے فیصلہ اب موجودہ وزیر تعلیم سردار شاہ کو کرنا ہے۔

اسکول ڈیسکوں کی خریداری کامعاملہ سندھ ہائیکورٹ پہنچ گیا

دوسری جانب سندھ کے اپوزیشن لیڈر حلیم عادل شیخ نے کہا ہے ڈیسک ٹھیکے کی تفصیل سیپرا ویب سائیٹ سے ہٹادی گئی ہیں۔اپوزیشن رہنما نے سوال اُٹھايا کہ ایسی کیا چوری تھی کہ تفصیلات ویب سائٹ سے ہٹائی گئيں۔

انہوں نے کہا کہ ڈیسک ٹھیکے کے معاملے پر حکومتی وزرا میں جھگڑا چل رہا ہے، ذمہ داری وزیراعلیٰ اور دونوں وزیر آپس میں طے کرلیں تاہم ڈیسک کرپشن کے معاملے کو ڈوبنے نہیں دیں گے۔

محکمہ تعلیم سندھ ایک ڈیسک 29ہزار میں خریدےگا

اس سے قبل سندھ کے سرکاری اسکولوں کےلیے ایک ڈیسک کی 29ہزار روپے میں خریداری کا معاملہ سندھ ہائیکورٹ پہنچ گیا تھا، جس پر عدالت نے دونوں فریقین کو نوٹسز جاری کردئیے تھے جبکہ 2 بینج بھی سماعت کےلیے مقرر کردیا تھا۔

حلیم عادل شیخ ساڑھے 5ہزار کی اسکول ڈیسک اسمبلی لے آئے

گزشتہ دنوں سرکاری اسکولوں ڈیسکوں میں کرپشن کے معاملے پر صوبائی وزیر تعلیم سردار شاہ ازسر نوڈیسک خریداری کا اعلان کیا تھا۔ صوبائی وزیر سعید غنی اور وزیر تعلیم سندھ سردار شاہ نے مشترکہ پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا تھا کہ مئی 2018ء ميں ايک سينٹرل پروکيورمنٹ کميٹی بنائی گئی تھی، کميٹی کے سربراہ نثار صديقی تھے۔ کميٹی کے پاس جو بڈز آئی تھيں اسے کميٹی نے رد کرديا تھا، بڈز ساڑھے5 سے 6 ہزار کی آئی تھيں تاہم کمیٹی نے سمجھا یہ کوالٹی صحیح نہیں ہوگی اسی لئے ٹینڈر فراہم نہیں گیا تھا۔

اسکول ڈیسکوں میں کرپشن کامعاملہ:سردارشاہ کاازسر نوخریداری کااعلان

یاد رہے کہ دو روز قبل اپوزیشن لیڈر حلیم عادل شیخ لکڑی اور لوہے سے تيار شدہ ڈيسک ساڑھے 5ہزار روپے میں خرید کر سندھ اسمبلی لےآئے تھے جبکہ ٹرانسپرنسی انٹرنیشنل نے بھی وزیراعلیٰ سندھ مراد علی شاہ کو خط لکھ کر بتایا کہ فرنیچر کی خریداری میں 3 ارب کا ٹیکہ لگایا جارہا ہے۔

WhatsApp FaceBook
تازہ ترین
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube