Friday, October 22, 2021  | 15 Rabiulawal, 1443

لباس سے ذہانت کو نہیں ناپا جاسکتا، ماہرتعلیم ڈاکٹرسلمیٰ

SAMAA | - Posted: Sep 16, 2021 | Last Updated: 1 month ago
SAMAA |
Posted: Sep 16, 2021 | Last Updated: 1 month ago

ذہانت کا تعلق چہرہ سے نہیں دماع کے استعمال سے ہوتا ہے،ماہر نفسیات

 

 

ماہرتعلیم ڈاکٹر سلمیٰ کا کہنا ہے کہ لباس اور ذہانت دو الگ الگ معاملات ہیں، لباس سے کسی کی ذہانت کو نہیں ناپا جاسکتا۔

سماء کے پروگرام سات سے آٹھ میں گفتگو کرتے ہوئے ڈاکٹر سلمیٰ کا کہنا تھا کہ لباس کا تعلق انسان کے طرز زندگی اور ماحول سے ہے، جس ماحول میں آپ رہتے ہیں وہ آپ کے لباس میں نظر آتا ہے۔

ڈاکٹر پرویز ہود بھائی کی جانب سے برقعہ پہننے والی خواتین پر تنقید کے حوالے سے گفتگو کرتے ہوئے ماہر تعلیم ڈاکٹر سلمیٰ کا کہنا تھا کہ ذہانت کو لباس سے جوڑنا کم فہمی ہے ذہانت کا تعلق ماحول سے ہوتا ہے، لباس سے نہیں۔

انہوں نے کہا کہ ہم بڑے بڑے دعوے بعیر کسی تحقیق اور سروے کے شروع کردیتے ہیں حالانکہ یہ کسی کی ذاتی رائے تو ہوسکتی ہے اسے عوامی رائے نہیں کہا جاسکتا۔

ڈاکٹر سلمیٰ کا کہنا تھا کہ ذاتی رائے ہمارے تجربات پر منحصر ہوتی ہے مگر اسے عوامی رائے بنانے سے قبل ڈیٹا کا حوالہ ضروری ہے۔

انہوں نے کہا کہ جن لوگوں کے پاس دینی اور دنیاوی دونوں علوم ہوں وہ کبھی اس قسم کی باتیں نہیں کریں گے بلکہ خواتین کے لباس سے متعلق ہمیشہ متوازن بات کرتے ہیں۔

پروگرام میں گفتگو کرتے ہوئے رہنماء فنکشنل لیگ اور رکن سندھ اسمبلی نصرت سحرعباسی کا کہنا تھا کہ جو لوگ سمجھتے ہیں کہ حجاب سے خواتین کی ذہانت پر کوئی فرق پڑتا ہے غلط ہے۔

نصرت سحر عباسی کا کہنا تھا کہ حجاب کرنے سے قبل اور اب میرے لہجے میں کسی قسم کا کوئی فرق نہیں پڑا۔

انہوں نے کہا کہ اس قسم کی باتیں وہ لوگ کرتے ہے جو حجاب کرنے والی خواتین کو احساس کمتری کی طرف لے جانا چاہتے ہیں۔

پروگرام میں گفتگو کرتے ہوئے ماہر نفسیات ڈاکٹر معیز کا کہنا تھا کہ اس ملک میں آزادی ہے جس کے دل میں جو آتا ہے کہہ دیتا ہے۔

ڈاکٹر معیز کا کہنا تھا کہ جو خاتون حجاب پہنتی ہے وہ ویسے ہی ایک ڈسپلن ہے جیسے فجر کیلئے اٹھنا، رات کو جلدی سونا، آفس وقت پر پہنچنا وغیرہ۔

انہوں نے کہا کہ ڈسپلن کیلئے دو خصوصیات کا ہونا ضروری ہے ایک قوت ارادی اور دوسرا خود اعتمادی، جو خواتین حجاب پہنتی ہیں وہ ڈسپلن فالو کرتی ہیں۔

ڈاکٹر معیز کا کہنا تھا کہ حجاب سے خواتین کے نفسیات پر کوئی اثر نہیں پڑتا بلکہ یہ تو خود اعتمادی کی طرف اشارہ کرتی ہے، ذہانت کا تعلق چہرے سے نہیں دماغ کے استعمال سے ہوتا ہے۔

WhatsApp FaceBook
تازہ ترین
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube