Wednesday, October 27, 2021  | 20 Rabiulawal, 1443

حکومت کامیڈیا کےخلاف نیاقانون آزادی صحافت اورجمہوریت پرڈاکا ہے،بلاول

SAMAA | - Posted: Sep 13, 2021 | Last Updated: 1 month ago
SAMAA |
Posted: Sep 13, 2021 | Last Updated: 1 month ago

پاکستان پیپلزپارٹی کےچئیرمین بلاول بھٹو زرداری نے کہا ہے کہ جب بھی کوئی آمر یا سیلیکٹڈ آتا ہے تو وہ کالے قانون لاتا ہےاور پیپلز پارٹی پارلیمان میں صحافیوں کے لیے آواز اٹھائے گی۔

اسلام آباد میں پیرکو پیپلزپارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری نے آزادی صحافت دھرنے میں جا کر صحافیوں سے ملاقات کی۔ بلاول بھٹو نے صحافیوں سے بات کرتے ہوئے بتایا کہ جب بھی کوئی آمر یا سیلیکٹڈ آتا ہے تو وہ کالے قانون لاتا ہے۔ حکومت کا میڈیا کے خلاف نیا قانون آزادی صحافت اور جمہوریت پر ڈاکا ہے اور یہ معاشی حملہ اور عدلیہ بھی بھی حملہ ہے۔

بلاول بھٹو نے بتایا کہ پیپلزپارٹی نے اقتدار میں آکر پرویز مشرف کی پابندیوں کو ہٹایا اور اب بھی پیپلز پارٹی پارلیمان میں صحافیوں کے لیے آوازاٹھائے گی جبکہ حکومت یہ قانون زبردتی پاس کرانا چاہتی ہے۔

انھوں نے کہا کہ اگر یہ قانون بنا تو فورا عدالت سے رجوع کریں گے کیوں کہ  شک ہے کہ حکومت مشترکہ اجلاس سے یہ بل پاس کرانا چاہتی ہے اور اس لئے آج اس بل کے خلاف پارلیمنٹ میں احتجاج کریں گے۔

بلاول بھٹو نے یہ بھی کہا کہ اس حکومت نے بہت دفعہ اداروں کومتنازعہ کیا اورملک میں آزاد میڈیا ہونے سے سب پر تعمیری تنقید ہوگی جس سے کسی جماعت کا نہیں بلکہ ملک کا فائدہ ہوگا۔

سیاست سے متعلق ان کا کہنا تھا کہ مولانا فضل الرحمن کا احترام کرتا ہوں اورہم عدم اعتماد کی تحریک لا کر سیلیکٹڈ کا خاتمہ کرسکتے ہیں۔ انھوں نے یقین دلایا کہ عوام کے مستقبل کو سامنے رکھتے ہوئے فیصلے کریں گےاور اس سلسلے میں ہمیں اپنی کوششیں جاری رکھنا ہونگی۔بلاول نے کہا کہ پارلیمان میں عوام کے مسائل کے بجائے ذاتی حملے ہوتے ہیں۔

WhatsApp FaceBook
تازہ ترین
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube