Thursday, October 28, 2021  | 21 Rabiulawal, 1443

افغانستان سے رابطہ کرکے دنیا منجمداثاثےفوری بحال کرے،شاہ محمود

SAMAA | - Posted: Sep 10, 2021 | Last Updated: 2 months ago
SAMAA |
Posted: Sep 10, 2021 | Last Updated: 2 months ago

وزیرخارجہ شاہ محمود قریشی نے کہا ہے کہ دنیا افغانستان کے منجمد اثاثے فوری بحال کرے۔

اسلام آباد میں جمعہ کو اسپین کے وزیرخارجہ جوزمینوئیل البرس اوروزیرخارجہ مخدوم شاہ محمود قریشی نے مشترکہ پریس کانفرنس کی۔

شاہ محمود نے کہا کہ افغانستان میں نئی حقیقت کودنیا تسلیم کرے۔پاکستان افغانستان میں امن واستحکام چاہتا ہے تاہم کچھ تخریب کار ایسے ہیں جو افغانستان میں استحکام نہیں چاہتے۔ انھوں نے مطالبہ کیا کہ دنیا کو چاہئے کہ افغانستان سے رابطہ کرے اور افغانستان کو فوری طور پر انسانی بحران سے بچائے۔ افغانستان کے لیے عالمی سطح پر فوری طور پر فنڈ ریزنگ کرنا ہوگی کیوں کہ افغانستان کی معاشی تباہی دنیا اور خطے کے مفاد میں نہیں ہوگی۔

 وزیرخارجہ شاہ محمود نے بتایا کہ افغانستان میں نئے سیٹ اپ کو تسلیم کرنے کے معاملے پر ابھی جائزہ لے رہے ہیں۔ دیکھنا ہوگا کی افغانستان میں کیا پالیسی اختیار کی جاتی ہے اوروعدو‍ں پر کتنا عمل ہوتا ہے۔انھوں نے یہ بھی کہا کہ افغانستان میں بہرحال زمینی حقائق موجود ہیں لیکن جلد بازی میں تسلیم کرنے کا کوئی جواز نہیں۔

شاہ محمود قریشی نےہسپانوی ہم منصب سے ملاقات سے متعلق بتایا کہ دونوں رہنماؤں کے درمیان ملاقات میں خطے میں امن افغانستان کی بحالی اور امداد پر تبادلہ خیال ہوا۔

انھوں نے بتایا کہ 15 اگست کے بعد یہ چھٹے وزیر خارجہ کا دورہ اسلام آباد ہے اوروزیر اعظم نے اس معاملے پر 13 سربراہان مملکت سے بات کی ہے۔

اسپین سے متعلق شاہ محمود نے کہا کہ اسپین یورپی یونین میں تیسرا بڑا سرمایہ کار ہے اور اسپین کوچاہئے کہ پاکستان میں سرمایہ کاری کے مواقعوں سے فائدہ اٹھائے جبکہ  پاکستانیوں کیلئے اسپین ٹریول ایڈوائزری پر بھی نظرثانی کرے۔

اس موقع پرہسپانوی وزیر خارجہ کا کہنا تھا کہ اسپین افغانستان پر ڈونرکانفرنس بلائے گا کیوں کہ ہم افغان عوام کی مدد کرنا چاہتے ہیں اور مستقبل میں افغانستان میں بہتری کیلئے مل کرکام کریں گے۔ پاکستان اور اسپین، افغانستان میں امن، استحکام اور خوشحالی چاہتے ہیں۔انھوں نے مزید بتایا کہ اسپین نہیں چاہتا کہ افغانستان میں مشکل صورتحال کےاثرات پاکستان یا کسی ہمسایہ ملک پرمرتب ہوں۔

پاکستان ہم منصب سے ملاقات سے متعلق ہسپانوی وزیرخارجہ نے بتایا کہ دوطرفہ سطح پر سیاحت اور دیگر شعبوں میں سرمایہ کاری کے حوالے سے کلیدی اور مفید گفتگو ہوئی ہے۔ پاکستان اور اسپین کے مابین دوطرفہ سیاسی مشاورتی اجلاس جلد میڈرڈ میں منعقد ہوگا۔

ہسپانوی وزیرخارجہ نے کہا کہ پاکستان سے متعلق حقائق کا علم ہے اور1 لاکھ پاکستانی اسپین میں ہیں جبکہ جی ایس پی پلس اسکیم میں پاکستان اہم ترین ملک ہے۔

انھوں نے واضح کیا کہ اسپین انسانی حقوق اور خواتین کے حقوق پر کمپرومائز نہیں کرتا۔ انسانی حقوق خصوصاً خواتین کے حقوق افغانستان میں ہوں یا کشمیر میں ہر جگہ اہم ہیں۔

ہسپانوی وزیر خارجہ نے کہا کہ آزاد نقل وحرکت، انسانی حقوق، عوامی فلاح و بہبود اور دیگر امور پر عملدرآمد اہم ہے۔افغان عوام کو انسانی بنیادوں پر امداد کی فراہمی کے لیے تیار ہیں اور افغانستان کی انسانی بنیادوں پر امداد عالمی برادری کی مشترکہ ذمہ داری ہے۔

WhatsApp FaceBook
تازہ ترین
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube