Wednesday, October 27, 2021  | 20 Rabiulawal, 1443

الیکٹرانک ووٹنگ میشن پر الیکشن کمیشن کے اعتراضات یکطرفہ قرار

SAMAA | - Posted: Sep 8, 2021 | Last Updated: 2 months ago
SAMAA |
Posted: Sep 8, 2021 | Last Updated: 2 months ago

بغیر بریفنگ ہی مشین پر اعتراضات عائد کیے تھے

وزارت سائنس اینڈ ٹیکنالوجی نے الیکٹرانک ووٹنگ مشین پر الیکشن کمیشن کے اعتراضات کو یکطرفہ قرار دے دیا۔

وفاقی وزیر سائنس و ٹیکنالوجی شبلی فراز کہتے ہیں کہ الیکشن کمیشن نے بغیر بریفنگ ہی مشین پر اعتراضات عائد کر دیے۔

الیکشن کمیشن نے وزارت سائنس کی ٹیکنیکل ٹیم کو آج پہلی مرتبہ بلایا ہے۔ وزارت سائنس کی ٹیکنیکل ٹیم نے آج الیکشن کمیشن کو بریفنگ دی اور الیکشن کمیشن کے سوالات کے جوابات دیے ہیں۔

وزارت کے حکام کا کہنا ہے کہ الیکشن کمیشن نے وزارت سائنس کی مشین پر کوئی اعتراض نہیں اٹھایا، جو اعتراض تھے وہ ٹیکنیکل نہیں بلکہ عمومی نوعیت کے تھے۔

شبلی فراز نے یہ بھی کہا کہ الیکشن کمیشن کے 37 میں سے 27 اعتراضات کا ٹیکنالوجی سے کوئی تعلق نہیں، یہ ای سی پی کی استعداد کار کے حوالے سے ہیں جبکہ 10 نکات الیکٹرانک ووٹنگ مشین سے متعلق ہیں۔

انہوں نے کہا کہ وزارت سائنس نے جو مشین بنائی ہے اس میں سارے نکات کا ازالہ ہے، الیکشن کمیشن نے دیکھنا ہے کہ اس نے 27 نکات سے کیسے نمٹنا ہے، الیکشن کمیشن کے 27 اعتراضات سے نمٹنا ہمارا کام نہیں کیونکہ ہمارا کام قانون سازی ہے۔

دوسری جانب حکومت نے بین الاقوامی مبصرین سے الیکٹرانک ووٹنگ مشین کا معائنہ کرانے کا فیصلہ بھی کیا ہے۔

تقریباً سات ماہ قبل اس وقت کے وفاقی وزیر سائنس اینڈ ٹیکنالوجی فواد چوہدری نے کہا تھا کہ پاکستان نے الیکٹرانک ووٹنگ مشین تیار کرلی ہے۔

حکومت کو الیکٹرانک ووٹنگ مشین کے آئندہ انتخابات میں استعمال کیلئے پارلیمنٹ سے منظوری لینا ہوگی۔

WhatsApp FaceBook
تازہ ترین
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube