Thursday, October 28, 2021  | 21 Rabiulawal, 1443

کراچی:طلبہ کوکروناوائرس سے بچاؤ کی ویکسین لگانےکی مہم روک دی گئی

SAMAA | - Posted: Sep 6, 2021 | Last Updated: 2 months ago
SAMAA |
Posted: Sep 6, 2021 | Last Updated: 2 months ago

والدین کا اجازت نامہ ہو تو ویکسین لگائی جائے۔

سندھ میں طلبہ و طالبات کو کرونا وائرس سے بچاؤ کی ویکسین لگانے کی مہم روک دی گئی۔

محکمہ تعلیم سندھ کی جانب سے طلبہ کا ڈیٹا محکمہ صحت کو فراہم نہ کئے جانے پر کرونا وائرس سے بچاؤ کی ویکسین شروع نہیں ہوسکی۔ محکمہ صحت سندھ کا موقف ہے کہ والدین کا اجازت نامہ ہو تو ویکسین لگائی جائے۔

محکمہ صحت سندھ کا یہ بھی کہنا ہےکہ طلبہ کی ویکسین کے لیے بے فارم اور این او سی کا ہونا لازمی ہے۔ 17 سال سے کم عمر بچوں کو ویکسین دینے کے حوالے سے این سی او سی نے کوئی واضح پالیسی نہیں دی ہے۔

گذشتہ روز وزیرتعلیم سندھ سيد سردارعلی شاہ کی زير اجلاس ميں 9ویں سے 12ویں جماعت کے طلبہ کی ویکسینیشن مہم کے لیے والدین سے رضامندی لینے کے طریقہ کار پر تفصیلی گفتگو کی گئی تھی۔ریجنل ڈائریکٹرز نے بريفنگ دی تھی کہ والدین سے رضامندی لینے کا پروفارما اسکولوں کو بھیجا گیا ہے۔

چیئرمین آل سندھ پرائویٹ اسکولز اینڈ کالجز ایسوسی ایشن حيدرعلی نے بتایا کہ طالب علموں کيلئے ویکسینیشن والدین کی جانب سے فارم جمع کرانے پرشروع ہوگی۔ ویکسینیشن کيلئے کلاس سے زیادہ متعین عمر کا خیال رکھا جائے گا اوراین سی او سی کی بتائی ہوئی عمر تک کے بچوں کو ویکسین لگائی جائے گی۔

حیدرعلی نے مزید بتایا کہ طلبہ کی ویکسینیشن محکمہ صحت کے مقررہ مراکز پرہوگی اور ڈسٹرکٹ ہیلتھ آفیسر کی نگرانی میں مہم چلائی جائے گی جبکہ محکمہ تعلیم معاونت کاکام کرے گا۔

WhatsApp FaceBook
تازہ ترین
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube