Wednesday, October 27, 2021  | 20 Rabiulawal, 1443

گوادر: مظاہرین سے جھڑپ، اسسٹنٹ کمشنر گوادر زخمی

SAMAA | - Posted: Aug 18, 2021 | Last Updated: 2 months ago
SAMAA |
Posted: Aug 18, 2021 | Last Updated: 2 months ago

گوادر میں میرین ڈرائیو اور جاوید کمپلیکس پر اسسٹینٹ کمشنر گوادر، اسسٹنٹ کمشنر پسنی اور نیشنل پارٹی کے مظاہرین میں جھڑپ کے دوران اسسٹنٹ کمشنر گوادر اور متعدد مظاہرین زخمی ہوگئے۔

نیشنل پارٹی کی جانب سے چائنیز ٹرالرز کی پاکستان کے سمندری حدود میں ممنوعہ جالوں کے ذریعے مچھلی کے شکار، گوادر سمیت مکران بھر میں بجلی کی 16 سے 18 گھنٹے کی لوڈ شیڈنگ اور جیونی پیشکان میں مظہر صحت پانی کی فراہمی کے خلاف صبح سے جاری پہیہ جام اور شٹر ڈاؤن ہڑتال کے دوران اسسٹنٹ کمشنر گوادر کیپٹن اطہر عباس اور اسسٹنٹ کمشنر پسنی عارف زرغون مظاہرین سے مذاکرات کیلئے پہنچے تو روڈ بلاک ختم نہ کرنے پر اسسٹنٹ کمشنر گوادر کیپٹن اطہر عباس اور اسسٹنٹ کمشنر پسنی عارف زرغون اور مظاہرین کے درمیان تلخ کلامی کے بعد جھڑپ ہوگئی۔

اسسٹنٹ کمشنر پسنی نے نیشنل پارٹی کے بزرگ رہنما اشرف حسین کو گریبان سے پکڑ کر گھسیٹنے کی کوشش کی تو کارکنان مشتعل ہوگئے اور سڑک میدان جنگ بن گیا۔

مظاہرین افسران اور لیویز اہلکار آپس میں دست گریبان ہوکر گتھم گتھا ہوگئے اور میرین ڈرائیو میدان جنگ بن گی ایک دوسرے پر گھونسوں اور تھپڑوں کی بارش کردی جس سے حالات انتہائی کشیدہ ہوگئے۔

اسسٹنٹ کمشنر اطہر عباس کی گاڑی پر نیشنل پارٹی کے احتجاجی ورکرز نے پتھراؤ کیا جس سے اسسٹنٹ کمشنر کے پتھر لگنے سے زخمی ہونے کی غیر مصدقہ اطلاع ہے۔

اس دوران اسسٹنٹ کمشنرز کے گارڈ لیویز کے اہلکار بھی میدان میں کود پڑے اور مظاہرین سے گھتم گتھا ہوگئے جس سے نیشنل پارٹی کے مرکزی بزرگ رہنما اشرف حسین کو بھی چوٹیں لگنے کی اطلاعات موصول ہو رہی ہیں جبکہ فیض نگوری، آدم قادر بخش، سمیت کئی عہدیداروں اور کارکنان بھی زخمی ہوئے۔

WhatsApp FaceBook
تازہ ترین
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube