Wednesday, January 19, 2022  | 15 Jamadilakhir, 1443

نورمقدم قتل کیس: ملزم کے والدین کی درخواست ضمانت خارج

SAMAA | - Posted: Aug 5, 2021 | Last Updated: 6 months ago
SAMAA |
Posted: Aug 5, 2021 | Last Updated: 6 months ago
Noor Muqadam

فوٹو: ٹوئٹر

اسلام آباد کی مقامی عدالت نے نور مقدم قتل کیس میں ملزم ظاہر جعفر کے والدین کی درخواست ضمانت خارج کر دی۔

ایڈیشنل ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن جج محمد سہیل نے ملزم ظاہر جعفر کے والدین ذاکر جعفر اور عصمت جعفر کی درخواست ضمانت پر دلائل سننے کے بعد گزشتہ روز فیصلہ محفوظ کیا تھا۔

ظاہر جعفر کے والدین نے اپنی ضمانت کے لیے دو الگ الگ درخواستیں دائر کی تھیں۔

کیس کے تفتیشی افسر عبدالستار نے سما ڈیجیٹل کو بتایا کہ اگر ظاہر جعفر کے چوکیدار افتخار اور باورچی جمیل نے کچھ ہمت دکھائی ہوتی تو یہ سب کچھ نہ ہوتا۔

تفتیشی افسر نے کہا کہ دراصل ظاہر جعفر کی رہائش گاہ سے حاصل ہونے والی سی سی ٹی وی فوٹیج میں افتخار کی مجرمانہ غفلت ظاہر ہوتی ہے۔

نورمقدم قتل کیس:عدالت کاملزمان کی درخواست ضمانت پرفیصلہ محفوظ

انہوں نے بتایا کہ جب نور مقدم نے اپنی زندگی بچانے کے لیے بالکونی سے چھلانگ لگا کر باہر بھاگنے کی کوشش کی تو چوکیدار نے گیٹ بند کر دیا اور اسے جانے نہیں دیا۔

عبدالستار نے بتایا کہ لاش دن کے وقت تقریباً 10بجکر 12منٹ پر اسپتال لائی گئی تھی لیکن پوسٹ مارٹم اگلی صبح 9بجے کیا گیا۔

واضح رہے کہ گزشتہ سماعت پر مرکزی ملزم ظاہر جعفر کے وکلاء نے پوسٹ مارٹم رپورٹ پر سوال اٹھایا تھا۔

ملزم ظاہر جعفر کے والدین اس وقت جوڈیشل ریمانڈ پر اڈیالہ جیل میں قید ہیں۔

اسلام آباد کے علاقے ایف سیون فور میں سابق سفیر کی بیٹی نور مقدم کو عید الاضحیٰ سے ایک دن قبل انتہائی سفاک طریقے سے قتل کردیا گیا تھا، پولیس نے مرکزی ملزم ظاہر جعفر کو گرفتار کرلیا تھا جبکہ اس کے والدین اور ملازمین بھی حراست میں ہیں۔

WhatsApp FaceBook
تازہ ترین
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube