Monday, September 20, 2021  | 12 Safar, 1443

حاملہ خواتین کرونا کی کوئی بھی ویکسین لگوا سکتی ہیں

SAMAA | - Posted: Aug 4, 2021 | Last Updated: 2 months ago
SAMAA |
Posted: Aug 4, 2021 | Last Updated: 2 months ago

ایک ڈوز کیلئے کین سائنو لگوائی جائے

ملک میں حاملہ خواتین کرونا سے بچاؤ کے لیے موڈرنا ویکسین کے علاوہ کوئی بھی دوسری ویکسین لگوا سکتی ہیں۔

سماء کے پروگرام نیا دن میں گفتگو کرتے ہوئے یونیورسٹی آف ہیلتھ لاہور کے وائس چانسلر جاوید اکرم نے کہا کہ ملک میں دستیاب کوئی بھی ویکسین حاملہ خواتین کو لگائی جا سکتی ہے اور اگر صرف ایک ڈوز لگوانا چاہتی ہیں تو پھر کین سائنو ویکسین لگوائی جائے۔

وائس چانسلر جاوید اکرم نے کہا کہ انہوں نے پاکستان میں کین سائنو ویکسین کے تقریباً 40ہزار ٹرائل کیے ہیں جس میں سے 19ہزار خواتین تھی جن میں انہیں بالکل محفوظ پایا گیا۔

انہوں نے کہا کہ ثبوت کی بنیاد پر کین سائنو ویکسین کافی مؤثر ہے جبکہ تین ڈوز والی ویکسین زیڈ ایف 2001 کا ٹرائل بھی ہم تقریباً ختم کر چکے ہیں جوکہ سب سے مؤثر پائی گئی ہے۔ ویکسین زیڈ ایف 2001 خصوصی طور پر کرونا کی قسم ڈیلٹا اور بی117 سمیت 9اقسام کے خلاف کافی مؤثر ہیں۔

وائس چانسلر نے مزید کہا کہ حاملہ خواتین کے لیے موڈرنا یا فائزر ویکسین بہتر ہے لیکن ضروری نہیں کہ صرف یہی لگوائی جائے البتہ اس بات کو یقینی بنایا جائے کہ ایسی خواتین کو ویکسین دوسرے یا تیسرے سمسٹر میں لگائی جائے کیونکہ پہلے سمسٹر میں ویکسین کے اثرات سے متعلق کچھ نہیں کہا جا سکتا۔

ایک سوال پر انہوں نے کہا کہ دل، شوگر ارو بلڈ پریشر سمیت دیگر امراض میں مبتلا افراد ڈاکٹر کے مشورے سے کوئی بھی ویکسین لگوا سکتے ہیں لیکن اگر وہ خود کو بہتر محسوس کرتے ہیں تو خود ہی جا کر ویکسین لگوا لیں۔

یونیورسٹی آف ہیلتھ لاہور کے وائس چانسلر جاوید اکرم ویکسین زیڈ ایف 2001 کے پرنسپل انویسٹیگیٹر بھی ہیں۔

WhatsApp FaceBook
تازہ ترین
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube