Tuesday, September 21, 2021  | 13 Safar, 1443

کراچی: نالوں اور اطراف میں کچرا پھینکنے پر قانونی کارروائی ہوگی

SAMAA | - Posted: Jul 30, 2021 | Last Updated: 2 months ago
SAMAA |
Posted: Jul 30, 2021 | Last Updated: 2 months ago

فائل فوٹو

کمشنر کراچی کی جانب سے شہر بھر کے نالوں اور اطراف کی جگہوں پر دفعہ 144(6) نافذ کردی گئی ہے۔ نالوں اور اطراف میں کچرا پھینکنے پر مکمل پابندی عائد ہوگی، جب کہ خلاف ورزی کرنے والوں کے خلاف قانونی کاروائی عمل میں لائی جائے گی۔

کمشنر کراچی کی جانب سے نوٹی فیکیشن جاری کردی گیا۔ اعلامیہ مون سون کے سلسلے میں سندھ سالڈ ویسٹ مینجمنٹ بورڈ کی سفارشات پر جاری کیا گیا۔ سالڈ ویسٹ حکام کا کہنا ہے کہ کچرا چننے والے گروہ کچرے سے کام کی چیزیں نکال کر باقی کچرا نالے میں پھینک کر نالے چوک کر دیتے ہیں۔

صوبائی حکومت کا کہنا ہے کہ کراچی کے 3 بڑے نالے محمود آباد نالہ، گجر نالہ، اورنگی نالہ اور دیگر چھوٹے بڑے نالوں کے اطراف کچرا چننے والوں کے تقریباً 100 سے زائد گروہ موجود ہیں، جو کچرے سے کام کی اشیاء نکال کر باقی کچرا نالوں میں پھینک کر چوک کر دیتے ہیں جس سے بارش میں یہ نالے اوورفلو ہوتے ہیں اور پانی آبادیوں میں داخل ہوجا تھا ہے۔

حکام کے مطابق صوبائی حکومت ہر سال نالے صاف کرتی ہے لیکن ہر سال کچرا نالوں میں پھینکنے کی وجہ سے سیلابی صورت حال پیدا ہو جاتی ہے۔ لہذا متوقع بارش کے پیش نظر پہلے سے اقدامات کرتے ہوئے کچرا پھینکنے پر28 ستمبرتک مکمل پابندی عائد کردی گئی ہے۔

کمشنر کراچی نے نوٹی فیکیشن میں تمام ڈپٹی کمشنرز اور اسسٹنٹ کمشنرز کو ایسے افراد کے خلاف قانونی چارہ جوئی کی ہدایت کردی ہے۔ اس سلسلے میں شہریوں سے بھی اپیل ہے کہ سندھ حکومت کے ساتھ تعاون کرتے ہوئے نالوں و اطراف اور جگہ جگہ کچرا پھینکنے سے گریز کریں اورایسے لوگوں کی نشاندہی بھی کریں جو شہر کو نقصان پہنچارہے ہیں۔

WhatsApp FaceBook
تازہ ترین
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube