Thursday, September 23, 2021  | 15 Safar, 1443

نور مقدم قتل کیس:عدالتی مہم کیلیے19گھنٹوں میں 36ہزار ڈالرز جمع

SAMAA | - Posted: Jul 29, 2021 | Last Updated: 2 months ago
SAMAA |
Posted: Jul 29, 2021 | Last Updated: 2 months ago

فوٹو: ٹوئٹر

سابق سفیر کی بیٹی نور مقدم کے قاتل کو سزا اور عدالت میں مقدمہ لڑنے کےلیے شروع کی گئی ‘گو فنڈمی’ مہم میں 19 گھنٹوں کے دوران حیرت انگیز طور پر 36 ہزار ڈالر سے زائد رقم جمع کرلی گئی۔

نور مقدم کے ایک دوست کی جانب سے اس مہم کا باقائدہ آغاز کیا گیا تھا جس میں انہوں نے اپیل کی تھی کہ ظاہر جعفر ایک امیر گھرانے سے تعلق رکھتا ہے، اس کےوالدین کے پاس شہر کے بہترین وکلاء اور قانونی ماہرین کی مدد حاصل کرلی ہے اور ان کے پاس وسائل ہیں کہ وہ اس جنگ کو بلا مقابلہ لڑ سکیں۔ نور کے دوست کی حیثیت سے اس مہم کا آغاز کر رہے ہیں تاکہ والدین اپنی بیٹی کو انصاف دلا سکیں۔

اس مقدمے میں انداز ایک لاکھ 20 ہزار ڈالرز کا خرچ لگنے کی امید کی جارہی ہے جبکہ اب تک 36 ہزار 354 ڈالرز جمع کرلیے گئے ہیں۔

مہم بدھ کے روز طارق غفار نے شروع کی تھی چونکہ عدالتی مقدمات لمبے ہوتے ہیں قانونی چارہ جوئی کے متعدد مراحل کےلیے کل اخراجات کا حساب لگایا جاتا ہے۔ “اس پلیٹ فارم کے ذریعہ جمع ہونے والی تمام آمدنی نور کے معاملے میں براہ راست لڑنے کے لئے استعمال ہوگی۔”

دریں اثنا ، ظاہر جعفر کے والدین نے نور مقدم کے والدین سے تعزیت کےلیے ڈی اے ڈبلیو این اخبار میں ایک نوٹس شائع کیا تھا۔ جس میں کہا گیا تھا کہ سفاکانہ قتل پر ہم غمزدہ ہیں اور اس کی مذمت کرتے ہیں۔

اس سے قبل اسلام آباد کے علاقے ایف سیون میں سابق سفیر کی بیٹی نور مقدم کو عید الاضحیٰ سے ایک دن قبل انتہائی سفاک طریقے سے قتل کردیا گیا تھا، پولیس نے مرکزی ملزم ظاہر جعفر کو گرفتار کرلیا تھا جبکہ اس کے والدین کو بھی حراست میں لیا جاچکا ہے۔

ملزم کے والدین اور ملازمین کو جوڈیشل ریمانڈ پر اڈیالہ جیل بھجوا دیا گیا ہے۔ قتل کا مقدمہ تھانہ کوہسار پولیس اسٹیشن میں درج ہے۔

WhatsApp FaceBook
تازہ ترین
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube