Sunday, September 19, 2021  | 11 Safar, 1443

رنگ روڈ کیس: سابق کمشنر راولپنڈی جوڈیشل ریمانڈ پرجیل منتقل

SAMAA | - Posted: Jul 28, 2021 | Last Updated: 2 months ago
SAMAA |
Posted: Jul 28, 2021 | Last Updated: 2 months ago
Rawalpindi ring road

فائل فوٹو

لاہور کی ضلع کچہری نے رنگ روڑ راولپنڈی منصوبے میں مبینہ کرپشن اور بے ضابطگیوں کے کیس میں گرفتار سابق کمشنر راولپنڈی محمد محمود اور پروجیکٹ ڈائریکٹر وسیم تابش کو جوڈیشل ریمانڈ پر جیل بھیج دیا۔

بدھ 28جولائی کو گرفتار ملزمان کو جسمانی ریمانڈ مکمل ہونے پر عدالت میں پیش کیا گیا۔ اینٹی کرپشن نے ملزمان کے جسمانی ریمانڈ میں توسیع کی استدعا کی اور کہا کہ ملزمان سے تفتیش مکمل کرنی ہے۔

دوران سماعت سابق کمشنر روسٹرم پر آئے اور کہا کہ تیرہ دن کے ریمانڈ میں اینٹی کرپشن والے کچھ نہیں نکال سکے۔ ایک دن کا ریمانڈ رہتا ہے وہ بھی دے دیں تاکہ انکی کوئی حسرت نہ رہ جائے۔

سرکاری وکیل کی جسمانی ریمانڈ کی استدعا پر جوڈیشل مجسٹریٹ نے کہا کہ تیرہ دن میں جو نہیں کیا تو اینٹی کرپشن ایک دن میں کیا کر لیں گے۔

رنگ روڈ کیس:سابق کمشنر اور لینڈ ایکوزیشن آفیسر راولپنڈی گرفتار

عدالت نے اینٹی کرپشن کی مزید جسمانی ریمانڈ کی استدعا مسترد کردی اور سابق کمشنر راولپنڈی محمد محمود اور وسیم تابش کو جوڈیشل ریمانڈ پر جیل بھیج دیا۔ عدالت نے چودہ روز بعد ملزمان کو دوبارہ عدالت کے روبرو پیش کرنے کا حکم دے دیا۔

واضح رہے کہ راولپنڈی کے رنگ روڈ کیس میں اينٹی کرپشن نے سابق کمشنر راولپنڈی کيپٹن ريٹائرڈ محمد محمود اور لینڈ ایکوزیشن آفیسر کو دو ہفتہ قبل گرفتار کیا تھا۔

ابتدائی تحقيقاتی رپورٹ میں کابینہ کے کسی رکن کے ملوث ہونے کا ذکر نہیں کیا گیا ہے۔ رپورٹ میں یہ بھی بتایا گیا کہ رنگ روڈ منصوبے سے متعلق ہاؤسنگ سوسائیٹیز کی تحقیقات نیب کرے گا۔

یہاں یہ بات بھی قابل ذکر ہے کہ رنگ روڈ میں کیس میں زلفی بخاری اور غلام سرور خان کے ملوث ہونے کا الزام تھا۔ الزامات کے بعد زلفی بخاری نے معاون خصوصی کےعہدے سے استعفیٰ ديا تھا۔

WhatsApp FaceBook
تازہ ترین
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube