Monday, September 20, 2021  | 12 Safar, 1443

نور مقدم کیس: ملزم ظاہر جعفر کے والدین،ملازمین گرفتار

SAMAA | - Posted: Jul 25, 2021 | Last Updated: 2 months ago
SAMAA |
Posted: Jul 25, 2021 | Last Updated: 2 months ago

فائل فوٹو

اسلام آباد پولیس نے سابق سفارت کار کی بیٹی کو قتل کرنے والے ملزم ظاہر جعفر کے والدین اور ملازمین کو بھی گرفتار کرلیا۔ پولیس نے ملزم کے برطانیہ میں بھی جرائم میں ملوث رہنے کا دعویٰ کیا ہے۔

اسلام آباد پولیس نے مقدمے میں ہفتہ 24 جولائی کی شب ملزم ظاہر کے والد ذاکر جعفر اور والدہ عصمت آدم جی کو گرفتار کرکے شاملِ تفتیش کیا ہے، جب کہ ڈی سی اسلام آباد کے مطابق تھیراپی ورکس نامی بحالی مرکز کو سیل کرنے کے احکامات جاری کیے گئے ہیں۔ پولیس حکام کا یہ بھی کہنا ہے کہ ملزمان کو شواہد چھپانے اور اعانت جرم پر گرفتار کیا گیا ہے۔

پولیس کا کہنا ہے کہ ممکنہ گواہان اور تمام افراد کو شامل تفتیش کر رہے ہیں۔ ملزم ظاہر جعفر پر برطانیہ میں3 مقدمات کی اطلاعات ہیں۔ حکام کے مطابق برطانیہ اور امریکا سے بھی ملزم کا کریمنل ریکارڈ حاصل کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔ جلد ملزم کا نام بھی ای سی ایل میں شامل کر دیا جائے گا۔

واضح رہے کہ اسلام آباد پولیس نے 20 جولائی کی رات ظاہر کو ان کے گھر سے گرفتار کیا تھا، جہاں نور کے والدین کے مطابق ملزم نے تیز دھار آلے سے بیٹی کو قتل کیا اور سر جسم سے الگ کیا تھا۔ پولیس نے آلہ قتل بھی برآمد کر لیا تھا۔

واقعہ عید الاضحی کی چاند رات کو رپورٹ ہوا۔ گھر کے چوکیدار اور 2 مزید ملازمین کو بھی حراست میں لیا گیا ہے۔

ترجمان پولیس کے مطابق ’مدعی شوکت مقدم جو کہ مقتولہ نور کے والد ہیں کے بیان اور اب تک موجود شواہد کی روشنی میں گرفتار ملزم ظاہر ذاکر جعفر کے والد ذاکر جعفر، والدہ عصمت آدم جی، گھریلو ملازمین افتخار اور جمیل کو شواہد چھپانے اور جرم میں اعانت کے الزامات پر گرفتار کر لیا گیا ہے۔‘

کیس میں اسلام آباد کے ادارے تھراپی ورکس سے متعلق بھی تفصیلات جاری ہیں۔ تھراپی ورکس سال 2007 سے اسلام آباد سمیت دیگر شہروں میں کاؤنسلک اور سائیکو تھراپی کی سہولت مہیا کر رہا ہے۔

اس بحالی مرکز نے تصدیق کی تھی کہ ملزم ظاہر یہاں کورس کر رہے تھے مگر انھوں نے ’اپنا کورس مکمل نہیں کیا تھا۔‘ ملزم کے ادارے سے منسلک ہونے کے دعوؤں پر کمپنی کا کہنا تھا کہ ظاہر کو ‘تھراپسٹ کی حیثیت سے کبھی بھی کسی مریض کو دیکھنے کی اجازت نہیں دی گئی تھی۔‘

ظاہر کی والدہ عصمت جعفر کی لنکڈ اِن پروفائل کے مطابق وہ خود بھی فیزیو تھراپی اور نیورو لنگوسٹک پروگرامنگ سے منسلک ہیں جس میں سائیکوتھراپی کا استعمال کیا جاتا ہے۔ انھوں نے اپنی پروفائل میں لکھا ہے کہ وہ تھراپی ورکس سے سنہ 2015 سے منسلک ہیں تاہم تھراپی ورکس کی ویب سائٹ پر موجود فکیلٹی میں ان کا نام درج نہیں ہے۔

ظاہر جعفر کراچی میں قائم نجی کمپنی کے مینجنگ ڈائریکٹر ذاکر جعفر کے صاحبزادے ہیں اور کمپنی کی ویب سائٹ کے مطابق ظاہر وہاں ‘چیف برانڈ سٹریٹجسٹ’ کے عہدے پر فائز تھے۔ تاہم اب کمپنی کی ویب سائٹ سے ان کے نام اور عہدے کو حذف کر دیا گیا ہے۔

دارالحکومت سمیت ملک کے مختلف شہروں میں نور کے بہیمانہ قتل کی مذمت اور انصاف کے لیے مظاہرے کیے جا رہے ہیں۔ وہیں نور کی ایک پرانی تصویر بھی شئیر کی جا رہی ہے جس میں وہ ایک تحریر کے لکھے چارٹ کو اٹھائے ہوئے ہیں۔

WhatsApp FaceBook
تازہ ترین
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube