Thursday, September 23, 2021  | 15 Safar, 1443

کرونا وائرس: ڈیلٹا ویرینٹ کی علامات کیا ہیں

SAMAA | - Posted: Jul 23, 2021 | Last Updated: 2 months ago
SAMAA |
Posted: Jul 23, 2021 | Last Updated: 2 months ago

بشکریہ آن لائن

کرونا وائرس کی نئی قسم ڈیلٹا کے شکار افراد میں کووڈ کی علامات بھی پرانی اقسام کے مقابلے میں مختلف ہیں، جب کہ عالمی ادارہ صحت کی جانب سے بھی اس کی سخت مانٹیرنگ جاری ہے۔

ڈیلیٹا ویرینٹ کی کم وقت میں تیزی سے پھیلنے پر ماہرین صحت نے شدید تشویش کا اظہار کیا ہے۔

اس نئی قسم کے پھیلاؤ کی زیادہ رفتار اور ویکسینز کی افادیت میں ممکنہ کمی کے باعث اس کے اثرات کے بارے میں جاننا اب بہت اہم ہوچکا ہے۔

سما ڈیجیٹل سے گفتگو میں نجی اسپتال کے آئیسولیشن وارڈ میں کام کرنے والے ڈاکٹر نے بتایا کہ متعدد ڈیلٹا ویرینٹ کے مریض جو آئی سی یو میں داخل ہیں، ان کی حالت تشویش ناک ہے۔ ڈیلیٹا ویرینٹ کے شکار مریضوں میں غیر معمولی علامتیں ظاہر ہو رہی ہیں جیسے سننے کی سماعت سے محروم ہونا، الٹیاں، پیٹ میں تکلیف اور تھکاؤٹ وغیرہ شامل ہیں۔

ڈیلٹا ویرینٹ کو بھارتی ویرینٹ کا نام بھی دیا گیا ہے، جو اب تک کی اطلاعات کے مطابق 70 ممالک میں پھیل چکا ہے۔ یہ وائرس پہلی بار گزشتہ سال 2020 دسمبر میں بھارت میں رپورٹ ہوا تھا۔ جو ایک شخص سے دوسرے شخص میں تیزی سے منتقل ہوتا ہے اور زیادہ خطرناک ہے۔

اس وقت برطانیہ میں سب سے تیزی سے پھیلنے والی ڈیلٹا قسم کی عام ترین علامات سردرد، گلے کی سوجن اور ناک بہنا ہیں۔

اس ڈیلٹا ویرینٹ کی شدید علامتیں مندرجہ ذیل ہیں۔

پیٹ میں درد
متلی ہونا
الٹیاں
بھوک نہ لگنا
سننے کی سماعت سے محروم ہونا
جوڑوں میں درد

جب کہ اس وائرس کے شکار لوگوں میں کچھ دیگر علامتیں بھی دیکھی گئی ہیں، جیسے کھال پر کھجلی ہونا، ایڑھی کا رنگ تبدیل ہونا، گلا خراب ہونا، سانس رکنا، سونگنے کی حس کم ہونا، ڈائریا، سر درد اور نہتی ناک یا بہت زیادہ نزلہ ہونا شامل ہیں۔

اس وائرس کے خلاف ویکسین بھی ایک موضوع دفاع کے طور پر کامیاب نہیں ہوسکی ہے۔ کچھ ایسے کیسز بھی سامنے آئے، جس میں 2 ڈوز لینے والے افراد علاج کے باوجود انتقال کرگئے۔

اس وائرس سے بچنے کیلئے مندرجہ ذیل باتوں کا خاص خیال رکھیں۔

اپنے ہاتھوں کو زیادہ سے زیادہ سینیٹائز کریں۔
ماسک پہنیں۔
اجتماعات سے گریز کریں۔
جتنی جلد ممکن ہوسکے، ویکسین کرائیں۔
جن میں علامتیں ظاہر ہوں، ان سے دور رہیں۔
غیر ضروری سفر سے پرہیز کریں۔

محققین نے خدشہ ظاہر کیا ہے کہ ڈیلٹا کی علامات کو بگڑے ہوئے نزلے کی علامات سمجھا جاسکتا ہے اور لوگوں کی جانب سے کوئی احتیاط نہیں کی جائے گی، جس سے اس کے پھیلاؤ میں مزید مدد ملے گی۔

WhatsApp FaceBook
تازہ ترین
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube