Saturday, September 25, 2021  | 17 Safar, 1443

لڑکی اور لڑکے پر تشددکا کیس،ملزمان کے جسمانی ریمانڈ میں مزید توسیع

SAMAA | - Posted: Jul 17, 2021 | Last Updated: 2 months ago
SAMAA |
Posted: Jul 17, 2021 | Last Updated: 2 months ago

   

اسلام آباد کی مقامی عدالت نے لڑکی اور لڑکے پر تشدد کیس میں گرفتار 4 ملزمان کے جسمانی ریمانڈ میں مزید 3 دن کی توسیع کردی ہے۔ 

ای الیون میں لڑکےاور لڑکی پر تشدد اور غیر انسانی سلوک کے کیس میں اہم پیش رفت ہوئی ہے اور متاثرہ جوڑے نے شناختی پریڈ کے دوران ملزمان کو پہچان لیا ہے۔

ہفتے کو جسمانی ریمانڈ پورا ہونے پر عثمان مرزا سمیت 4 ملزمان کو سخت سکیورٹی میں عدالت لایا گیا۔ عدالتی استفسار پر ملزم عثمان مرزا کا کہنا تھا کہ اس نے لڑکے یا لڑکی سے ایک روپیہ بھی نہیں لیا اوروہ خود صاحب حیثیت ہے اور اس کی لاکھوں روپے مالیت کی پراپرٹی اورکاروبار ہے۔اس لئے اس کو کسی سے رقم لینے کی ضرورت نہیں ہے۔

وکیل صفائی نے اہل خانہ اور وکلا کو ملزمان سے نہ ملنے دینے کی شکایت کی اور بتایا کہ ملزمان نے 10 روز سے کپڑے بھی تبدیل نہیں کئے ہیں۔ انھوں نے ملزمان کا میڈیکل بھی کروانے کی درخواست کی ۔

تفتیشی افسر نے کہا کہ ملزمان کی ویڈیو اور آڈیو کا فرانزک کروانا ہے اس لئے مزید ریمانڈ دیا جائے۔

تفتیشی افسر نے عدالت کو آگاہ کرتےہوئے بتایا ہے کہ ملزمان متاثرین سے چھینے والےسوا 11لاکھ روپے واپس کرنے کو تیار ہوگئے ہیں

عدالت نے دلائل سننے کے بعد ملزمان کا مزید 3 دن کا جسمانی ریمانڈ منظور کر لیا اور بیس جولائی کو دوبارہ پیش کرنے کا حکم دیتے ہوئے سماعت ملتوی کردی۔ 

جوڑے کو ہراساں اور ان پر تشدد کرنے والے مرکزی ملزم عثمان مرزا سمیت دیگر ملزمان نے پولیس کے سامنے مزید انکشافات کیے تھے کہ وہ متاثرہ لڑکی کو بلیک میل کرکے مختلف مواقع پر 13 لاکھ روپے بٹور چکے ہیں۔

واضح رہے کہ عدالت نے اس سے قبل لڑکا لڑکی تشدد کیس میں عثمان مرزا سمیت دیگر ملزمان کا مزید 4 روزہ جسمانی ریمانڈ منظور کیا تھا۔

WhatsApp FaceBook
تازہ ترین
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube