Tuesday, September 28, 2021  | 20 Safar, 1443

وزیراعظم عمران خان اور سابق افغان صدر کرزئی کے درمیان رابطہ

SAMAA | - Posted: Jul 15, 2021 | Last Updated: 2 months ago
SAMAA |
Posted: Jul 15, 2021 | Last Updated: 2 months ago

سابق افغان صدر حامد کرزئی کو بھی دعوت

پاکستان نے افغان مسئلے پر خصوصی امن کانفرنس کے انعقاد کا اعلان کیا ہے اور اس حوالے سے سابق افغان صدر حامد کرزئی کو بھی شرکت کی دعوت دے دی۔

وزيراعظم عمران خان نے حامد کرزئی سے ٹيلی فونک رابطہ کیا اور امن کانفرنس ميں شرکت کی دعوت دی جبکہ کابل ميں پاکستانی سفير نے بھی اس حوالے سے افغان رہنماؤں سے ملاقاتيں شروع کرديں۔

وزيراطلاعات فواد چوہدری کا کہنا ہے افغانستان کے استحکام اور سلامتی کے لیے پاکستان کی کوششيں جاری ہيں اور امید ہے کہ کانفرنس سے افغانستان کے مسائل کے حل کی نئی امید جاگے گی۔

افغانستان ميں پاکستانی سفير بھی امن کے لیے متحرک ہيں۔ منصور احمد خان نے کابل ميں افغان وزير امن سعادت منصور نادری سے ملاقات کی اور افغانستان ميں امن کے لیے پاکستانی کوششوں سے آگاہ کيا۔

پاکستانی سفیر نے نے سابق صدر حامد کرزئی، سربراہ قومی مصالحتی کونسل عبداللہ عبدللہ اور پاکستان میں سابق افغان سفیر عمرزاخیلوال سے بھی الگ الگ ملاقاتیں کیں۔

منصور احمد خان نے استاد کریم خلیلی ،احمدولی مسعود،استاد محقق اور سید اسحاق گیلانی سے بھی افغان امن عمل پر تبادلہ خیال کیا۔

اس سے پہلے پاکستانی سفير گلبدين حکمت يار، صلاح الدين ربانی اور افغان حکومت کے نمائندہ خصوصی محمد عمر داؤد زئی سے ملے اور دوطرفہ تعلقات پر بات چیت کی۔

دریں اثناء طالبان کو مخاطب کرتے ہوئے گلبدين حکمت يار نے تشدد کے خاتمے کی اپيل کی اور کہا کہ ہم نے اس وقت اسلام کی جنگ لڑی جب تم پيدا بھی نہيں ہوئے تھے۔

افغان صوبے پکتيکا ميں ہزاروں لوگوں نے جنگ کے خلاف مظاہرہ کيا اور افغان قیادت سے امن اور صلح کا مطالبہ کیا۔

امریکی محکمہ خارجہ کے ترجمان نيڈ پرائس نے افغانستان ميں امن کے ليے پاکستان کے کردار کی تعريف کرتے ہوئے کہا ہے کہ پاکستان اور امريکا دونوں محفوظ افغانستان چاہتے ہيں۔

WhatsApp FaceBook
تازہ ترین
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube