Sunday, September 19, 2021  | 11 Safar, 1443

لاہور:قربانی کےجانوروں پرعائد فیس کےنفاذ کو کالعدم قراردینےکی درخواست دائر

SAMAA | - Posted: Jul 15, 2021 | Last Updated: 2 months ago
SAMAA |
Posted: Jul 15, 2021 | Last Updated: 2 months ago
PAKISTAN, EID UL ADHA,

فوٹو: آن لائن

ہائی کورٹ میں لاہورسمیت پنجاب بھر کی مویشی منڈیوں میں قربانی کےجانوروں پرعائد فیس کے نفاذ کو کالعدم قراردینے کی درخواست دائر کردی گئی ہے۔

لاہور ہائیکورٹ میں قربانی کے جانوروں پرعائد فیس اور مویشی منڈیوں میں قائم پاکنگ پرعائد فیس کےخلاف درخواست پر سماعت ہوئی۔ جسٹس عائشہ اے ملک نے شہری حسن ملک کی مفاد عامہ کی درخواست پر سماعت کی۔

درخواست میں چیف سیکرٹری پنجاب،سیکرٹری لوکل گورنمنٹ پنجاب اور پنجاب کیٹل مارکیٹ مینجمنٹ کمپنی کو فریق بنایا گیا ہے۔درخواست میں پنجاب کیٹل مارکیٹ مینجمنٹ اینڈ ڈویلپمنٹ کمیٹی کی قانونی حیثیت کو چیلنج کیا گیا ہے۔

عدالت نےدرخواست کو اس نوعیت کی دیگردرخواستوں کی سماعت کے ساتھ لگانے کی ہدایت کردی۔عدالت نے ریمارکس دئیے کہ ایک ہی معاملہ پر بار بارپیٹیشن دائرکرنے کی پزیرائی نہیں کرسکتے۔ یہ معاملہ پہلے سےعدالت میں زیرسماعت ہےاوراس کیس کوبھی اکٹھے سنا جائے گا۔

 درخواست گزار کے وکیل نے عدالت کو بتایا کہ قربانی مذہبی اور شرعی تہوار ہے جس کو ہرسال لاکھوں مسلمان مناتے ہیں۔ حکومت پنجاب نے اس تہوار کو منانے اور قربانی کے لیے مویشی منڈیوں کو قائم کیا۔ ابتدائی طور پر پنجاب بھر کی 9 ڈویژن اورلاہور میں کیٹل مارکیٹوں کا قیام عمل میں لایا گیا۔لوکل گورنمنٹ ایکٹ 2019 کے تحت کیٹل مارکیٹوں میں قربانی کےجانوروں کےداخلے اور قائم  پارکنگ پر فیس عائد کردی گئی۔

درخواست گزارکے وکیل نے کہا کہ حکومت پنجاب نے پنجاب کیٹل مارکیٹ مینجمنٹ کمپنی کوفیس وصولی کا اختیاردےدیا ہے۔حکومت پنجاب کا قربانی کےجانوروں پرعائد فیس غیرشرعی،غیراسلامی اور آئین پاکستان کےمتصادم ہے۔ عدالت سے استدعا کی گئی ہے کہ لاہور سمیت پنجاب کیٹل مارکیٹوں میں قربانی کےجانوروں پرعائد فیس کے نفاذ کوکالعدم قراردیا جائے۔

WhatsApp FaceBook
تازہ ترین
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube