Tuesday, September 21, 2021  | 13 Safar, 1443

عثمان مرزا کےتشدد کا شکارلڑکا لڑکی کس حال میں ہیں؟

SAMAA | - Posted: Jul 8, 2021 | Last Updated: 2 months ago
SAMAA |
Posted: Jul 8, 2021 | Last Updated: 2 months ago

اسلام آباد پولیس کے ایس پی انویسٹی گیشن عطاءالرحمان کا کہنا ہے کہ اسلام آباد میں گرفتار ہونے والے شدہ ملزم عثمان مرزا کی جانب سے ہراساں کیے گئے لڑکا لڑکی کی آپس میں شادی ہوچکی ہے اور پولیس ان سے رابطے میں ہے۔
سماء کے پروگرام سات سے آٹھ میں گفتگو کرتے ہوئے عطاءالرحمان کا کہنا تھا کہ جب واقعہ رونما ہوا اس وقت وہ لڑکا لڑکی ایک دوسرے کے منگیتر تھے تاہم اس حادثے کے بعد انہوں نے شادی کرلی۔ پولیس افسر کا کہنا تھا کہ ویڈیو میں دیکھا جانے والا یہ واقعہ کچھ ماہ پرانا ہے تاہم صحیح وقت کا تعین ابھی کیا جا رہا ہے۔
عطاءالرحمان کا مزید کہنا تھا کہ سوشل میڈیا پر جیسے ہی ویڈیو وائرل ہوئی پولیس حرکت میں آئی اور تمام ملزمان پتہ لگا کر چار افراد گرفتار کرلیے۔
ایس پی انویسٹی گیشن نے کہا کہ مقدمہ کی مدعی بھی پولیس خود یعنی ریاست ہی ہے کیوں کہ متاثرہ فریق نے خود پولیس سے رابطہ نہیں کیا تھا۔
ایس پی انویسٹی گیشن کا کہنا تھا کہ ہمارے معاشرے میں لوگ اپنی عزت کے خاطر ایسے واقعات رپورٹ نہیں کرتے جس کے باعث اس قسم کے درندوں کو حوصلہ ملتا ہے۔
عطاء الرحمان کا کہنا تھا کہ جس فلیٹ میں یہ واقعہ ہوا وہ ملزم عثمان مرزا نے کرائے پر لیا ہوا تھا جس کی ایک چابی اس نے اپنے ایک دوست کو دی ہوئی تھی۔ انہوں نے مزید بتایا کہ عثمان مرزا کے اس دوست نے وہ چابی متاثرہ جوڑے کو رات ٹہرنے کے لیے دی تھی کیوں کہ وہ لڑکا لڑکی اسلام آباد انٹرویو دینے کے آئے ہوئے تھے۔
انہوں نے کہا کہ ملزم عثمان مرزا فطرتاً اسی قسم کا آدمی ہے اور پولیس کو اس نے اپنے بیان میں بتایا ہے کہ وہ وقوعہ کے وقت نشے کی حالت میں تھا۔
عطاءالرحمان کا کہنا تھا کہ وزیراعظم نے بھی معاملے کا نوٹس لیا ہے اور ملزم کو کیفرکردار تک پہنچایا جائے گا۔
ایس پی انویسٹی گیشن نے عوام سے بھی اپیل کی کہ اگر کسی کے پاس ملزم کے حوالے سے کوئی اور ثبوت ہو تو وہ پولیس کو دیا جائے۔
انہوں نے کہا کہ اس وقت ہمارے پاس فارنزک ثبوت ہے اور متاثرہ لڑکا اور لڑکی سے بھی ہم رابطے میں ہیں اور انہیں یقین دلایا ہے ک پولیس اور سوسائٹی آپ لوگوں کے ساتھ ہے جس پر وہ پولیس کے ساتھ تعاون پر آمادہ ہوگئے ہیں اور انہوں نے کہا کہ جہاں جہاں ہماری ضرورت ہوگی ہم وہاں تعاون کریں گے۔
پروگرام میں گفتگو کرتے ہوئے اداکارہ ماریہ واسطی کا کہنا تھا کہ اس واقعے نے مجھے جھنجھوڑ کر رکھ دیا ہے لیکن یہ ایک ملزم نہیں ایک مائنڈ سیٹ ہے جسے بدلنے کی ضرورت ہے۔
ماریہ واسطی کا کہنا تھا کہ پولیس کہہ رہی ہے کہ ملزم نشے میں تھا تو جو اس کے ساتھ باقی ملزمان تھے وہ تو نشے میں نہیں ہوں گے۔
ماریہ واسطی نے عوام سے اپیل کی کہ خدانخواستہ اگر ایسا واقعہ کسی کے ساتھ ہوجائے تو اسے عزت کا معاملہ بنانے کے بجائے رپورٹ کریں۔

WhatsApp FaceBook
تازہ ترین
 
 
 
مقبول خبریں
مقبول خبریں
 
 
 
 
 
Facebook Twitter Youtube